نام پنجاب ہائیکورٹ رکھنے اورمکمل خودمختاری کیلئے درخواست پر صوبائی حکومت کو دوبارہ نوٹس

نام پنجاب ہائیکورٹ رکھنے اورمکمل خودمختاری کیلئے درخواست پر صوبائی حکومت ...

لاہور(نامہ نگار خصوصی)لاہور ہائیکورٹ کا نام تبدیل کرکے پنجاب ہائیکورٹ رکھنے اورمکمل خودمختاری کے لئے دائردرخواست پر جسٹس عابد عزیز شیخ نے پنجاب حکومت کو دوبارہ نوٹس جاری کر دیئے ہیں ۔یہ درخواست سابق ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج جاوید رشید محبوبی کی طرف سے دائر کی گئی ہے جس میں لاہور ہائیکورٹ کا نام تبدیل کرنے کی استدعا کی گئی ہے، پنجاب حکومت کی جانب سے اس کیس میں جواب داخل نہیں کرایا گیا جس پر عدالت نے پنجاب حکومت کو دوبارہ نوٹس جاری کر دیئے ، درخواست گزار نے قانونی نکتہ اٹھایا ہے کہ قانون کے مطابق ہائیکورٹ کا نام کسی شہر کے نام سے منسوب نہیں کیا جا سکتا ، اس لئے لاہور ہائیکورٹ کا نام ایک شہر کے نام سے منسوب کرنے کے اقدام کو کالعدم قرار دیا جائے اور اسے پنجاب ہائی کورٹ کا نام دیا جائے۔درخواست گزار نے موقف اختیار کیا کہ عدلیہ کی انتظامیہ سے علیحدگی اورانتظامی طور پر خود مختار ہوناضروری ہے ، آئین کے آرٹیکل 175کے تحت پاکستان میں عدلیہ کو تمام سطح پر انتظامیہ سے الگ کیا جاناضروری ہے ،اسلام آباد ہائیکورٹ ایکٹ کی طرز پر سپریم کورٹ اور دیگر ہائیکورٹس کے لئے فوری طور پر قانون سازی کر کے مکمل انتظامی اختیارات دئیے جانے کا حکم جاری کیا جائے۔اس کیس کی مزید سماعت19ستمبر کو ہوگی۔

مزید : صفحہ آخر