کم عمر اور بچوں کی ڈرائیونگ پر پابندی پر سختی سے عمل درآمد کروایا جائے، لاہور ہائیکورٹ

کم عمر اور بچوں کی ڈرائیونگ پر پابندی پر سختی سے عمل درآمد کروایا جائے، لاہور ...

لاہور(نامہ نگار خصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے ٹریفک پولیس کو حکم جاری کیا ہے کہ کم عمر اور بچوں کی ڈرائیونگ پر پابندی کے قانون پر سختی سے عمل درآمد کروایا جائے ۔مسٹر جسٹس علی اکبر قریشی نے اس بابت چیف ٹریفک آفیسر کو مزید حکم دیا کہ موٹرسائیکل ، رکشہ ،چنگ چی اور گاڑیاں چلانے والے کم عمر ڈرائیوروں کے خلاف بھرپور آپریشن کیا جائے ۔فاضل جج نے مزید ہدایت کی کہ ڈرائیونگ کرنے والے کم عمر لڑکوں کے سرپرستوں کی آئندہ ضمانت نہ لی جائے۔ٹریفک رولز پر عمل نہ ہونے کے خلاف درخواست کی سماعت کے دوران فاضل جج نے چیف ٹریفک افسر کو مخاطب کرکے قراردیا کہ ٹریفک قوانین کے تحت کوئی کم عمرڈرائیونگ نہیں کر سکتا،کم عمر ڈرائیورز کے والدین کو پہلے مرحلے میں طلب کرکے بیان حلفی لیا جائے اور بیانی حلفی کی خلاف ورزی کرنے والے والدین کے خلاف کارروائی کی جائے اور انہیں حوالات میں بند کیا جائے۔فاضل جج نے ہیلمٹ پہننے کی پابندی پر عمل درآمد کرانے کی بھی ہدایت کی اور نشاندہی کی کہ بنگلہ دیش میں ہیلمٹ استعمال کرنے والے کو پیٹرول نہیں دیا جاتا، ہیلمٹ پہننے سے موٹر سائیکل سوار کی حفاظت ہوتی ہے ،سماعت کے دوران سی ٹی او نے عدالت کوبتایا کہ سگنل پر جگہ جگہ بھکاری کھڑے ہوتے ہیں،وہ بھی ٹریفک کے بہاؤ میں رکاوٹ کا باعث بنتے ہیں جس پرعدالت نے ڈی جی ویلفیئر پنجاب کو آج 13ستمبر کو پیش ہونے کا حکم دے دیا۔درخواست میں ٹریفک قوانین پر عمل درآمد نہ ہونے کی وجہ حادثات میں اضافہ کی نشاندہی کی گئی ہے،اس کیس کی مزید سماعت آج ہوگی۔

مزید : صفحہ آخر