مظفر گڑھ ہسپتال عملے کی غفلت ، خاتون ٹرپ ٹرپ کر جاں بحق

مظفر گڑھ ہسپتال عملے کی غفلت ، خاتون ٹرپ ٹرپ کر جاں بحق

مظفرگڑھ(نمائندہ خصوصی ،نامہ نگار) ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال مظفرگڑھ کے لیبر روم میں زچگی کے لیے آنیوالی خاتون مریضہ لیڈی ڈاکٹر اور عملہ کی غفلت سے تڑپ تڑپ کی جاں بحق ہوگئی، مسیحاؤں نے اپنی غفلت چھپانے کے لیے 3 گھنٹے تک خاتون کے مرنے کا ورثا کو نہ بتایا، تفصیل کے مطابق مظفرگڑھ کے ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال میں انسانیت کے مسیحاؤں کی غفلت کا ایک اور افسوسناک واقعہ پیش آیا جس میں لیبر روم کے عملہ نے زچگی کے لیے آنیوالی (بقیہ نمبر54صفحہ7پر )

خاتون مریضہ نگینہ رمضان پر کوئی توجہ نہ دی اور مریضہ کا خون زیادہ بہہ جانے کی وجہ سے حالت بگڑ گئی۔ لواحقین نے خاتون مریضہ کی حالت خراب ہونے پر شور مچایا تو ہسپتال عملہ مریضہ کو آپریشن کرنے کے لیے آپریشن تھیٹر میں لے گیا اور لواحقین سے 10 خون کی بوتلیں آپریشن کرنیکے لے لیں۔ لیکن بدقسمتی کے ساتھ خاتون مریضہ تڑپ تڑپ کر دم توڑ چکی تھی۔ جس کے بعد ہسپتال عملہ نے اپنی غفلت چھپانے کے لیے 3 گھنٹے تک مریضہ کے لواحقین کو اس کی موت کے بارے میں بھی نہیں بتایا اور مریضہ کے لواحقین کی طرف سے ہسپتال عملہ کے خلاف احتجاج کرنے پر 3 گھنٹے بعد خاتون کے جاں بحق ہونے کی اطلاع دیکر لاش لیجانے کا کہا جس مریضہ کے لواحقین نے ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال مظفرگڑھ کے ڈاکٹرز اور عملہ کے خلاف شدید احتجاج کیا ہے۔ اور جاں بحق ہونیوالی مریضہ کی لاش لیجانے سے انکار کردیا۔ بعد ازاں مریضہ کے لواحقین لاش کو لے گئے۔ جبکہ محکمہ صحت کے افسران اور ضلعی انتظامیہ نے سرکاری ہسپتالوں میں غفلت اور لاپرواہی کے بڑھتے ہوئے واقعات پر خاموشی اختیار کررکھی ہے اور ذمہ داروں کے خلاف کسی بھی قسم کی کاروائی نہیں کی جاتی ہے۔

نگینہ رمضان

مزید : ملتان صفحہ آخر