ملتان سمیت جنوبی پنجاب میں یوم فاروق اعظمؓ کے سلسلے میں تقعیبات ، سیمینار

ملتان سمیت جنوبی پنجاب میں یوم فاروق اعظمؓ کے سلسلے میں تقعیبات ، سیمینار

ملتان،ٹھٹھہ صادق آباد،خانیوال،وہاڑی،رحیمیار خان(نیوز رپورٹر،نمائندگان)ملتان سمیت جنوبی پنجاب کے مختلف شہریوں میں یوم فاروق اعظم کے سلسلے میں تقریبات ،سیمینار،کانفرنسوں کا انعقاد ملتان سے نیوز رپورٹر کے مطابق بزم سعید کے زیراہتمام جامعہ انوار العلوم نیوملتان میں یوم (بقیہ نمبر56صفحہ7پر )

حضرت سید نا فاروق اعظمؓ تقریب سے استاذ العلماء حافظ عبدالعزیز سعیدی،مولانا سعید احمد کریمی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حجرت فاروق اعظمؓ دنیائے اسلام کی وہ ہمہ گیر شخصیت ہیں جو اپنی شخصی وجاہت اور قابل تقلید قناعت کے باعث باکمال شناخت کے حامل ہیں انہوں نے کہا کہ حضرت سیدنا فاروق اعظمؓ کی مشاورت کی تائید مین اللہ رب العزت نے قرآن مجید کی 16آیات مقدسہ نازل فرمائیں تقریب میں مولانا راشد ممتاز سعیدی،مولانا محمد اکرم سعیدی،مولانا محمد اشرف سعیدی،مولانا خرم شہزاد،مولانا محمد شاکر سعیدی،مولانا صداقت حسین نے بھی خطاب کیا ۔دریں اثناء جامعہ غوثیہ ہدایت القرآن ممتاز آباد کے مہتمم علامہ محمد عثمان پسروری نے کہا کہ امیر المومنین حضرت سید نا فاروق اعظمؓ کا دور خلافت تاریخ اسلام کا ایک تابناک ترین باب ہے دنیا آج تک دور فاروقی کی مثال پیش نہیں کر سکی ان خیالات کا اظہار انہوں نے جامعہ غوثیہ ہدایت القرآن ممتاز آباد میں یوم فاروق اعظمؓ کے حوالے سے تقریب میں کیا انہوں نے مزید کہا کہ حضرت عمر فاروق اعظم ؓ کی ذات گرامی شجاعت و بہادری ،علم وعمل،عدل و انصاف اور عشق رسول کا خزینہ تھے تقریب میں علامہ اختر محمود ،علامہ نعمت اللہ پسروری،علامہ غلام یسین،علامہ محمد شفیق القاسمی،علامہ محمد قاسم سعیدی،علامہ محمد نعیم،علامہ محمد عالمگیر،علامہ محمد امتیاز،علامہ عبدالقیوم،علامہ مفتی حفیظ اللہ،قاری محمد رمضان،قاری خدا بخش،قاری محمد عارف،قاری محمد ریاض،مولا محمد آصف،مولانا محمد الیاس،مولانا محمد منیر،مولانا محمد جاوید،مولانا محمد مرتضیٰ نے بھی خطاب کیا ۔قومی یکجہتی کونسل کے زیراہتمام فاروقؓ اعظم کانفرنس کی صدارت ممتاز عالم دین علامہ رشید ارشد کشمیری نے کی جبکہ پروفیسر محمد حنیف چوہدری ، علامہ عبدالحق مجاہد ، حافظ ظفر قریشی ، پیر عامر محمود نقشبندی ، بابو نفیس انصاری ، ندیم قریشی ممبر صوبائی اسمبلی ، رانا اسلم ساغر ، بشپ تنویر شہزاد مہمانان خصوصی تھے۔ اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے علامہ رشید کشمیری اور پروفیسر حنیف چوہدری نے کہا کہ سیدنا فاروقؓ اعظم عالم اسلام کی ایسی عظیم قامت ہستی ہیں جنہیں اپنوں کے علاوہ غیر بھی مانتے ہیں۔ یورپ میں آج بھی آپ کے انداز حکومت سے رہنمائی لی جاتی ہے۔ سیدنا عمر فاروقؓ نے فلاحی ریاست کا تصور پیش کیا۔ پیر عامر نقشبندی اور ندیم قریشی نے کہا کہ آج اگر ہم دنیا میں سر اٹھا کر چلنا چاہتے ہیں تو پھر ہمیں سیدنا عمر فاروقؓ کی سیرت سے رہنمائی لینا ہوگی۔ بشپ تنویر شہزاد اور پیٹرک سرفراز گل نے کہا کہ عمر فاروقؓ کے دور میں اقلیتوں کے حقوق کا تحفظ تھا اور آج پوری دنیا میں حضرت عمر فاروقؓ کا نام لیا جاتا ہے۔ علامہ عبدالحق مجاہد اور رانا اسلم ساغرنے کہا کہ اگر پاکستان میں ریاست مدینہ کی بات کی جاتی ہے تو پھر سیدنا عمر فاروقؓ کے انداز حکومت اپنانا ہوں گے۔ اس موقع پر افتخار مغل ، احمد رضا ، مخدوم ارشد قریشی ، تاج محمد تاج ، منظور اعوان ، پروفیسر عبدالماجد وٹو ، علامہ ابوبکر عثمان ، عیسیٰ بھٹہ نے بھی خطاب کیا۔ خواجہ شفیق ، آصف رضا، نادر ، محمد فاروق شامل تھے۔متحدہ میلاد کونسل کے زیراہتمام یوم دفاع کے موقع پر’’سیدنا فاروق اعظمؓ سیمینار ‘‘سے صدارتی خطاب کرتے ہوئے صدر زاہد بلال قریشی نے کہا ہے کہ تاریخ اسلامی میں سیدنا فاروق اعظمؓ کو اہم مقام حاصل ہے۔آپ کا دور خلافت راشدہ اسلامی تاریخ کا سنہرا دور ہے جو آج کے مسلم حکمرانوں کیلئے مشعل راہ ہے۔آپؓ کے دور خلافت میں اسلام کا پھریرا شرق تا غرب لہرا رہا تھا۔آپ کی ہیبت سے قیصر و کسریٰ کے حکمران لرزہ براندام رہتے تھے۔انہوں نے کہا کہ سیدنا عمر فاروقؓ کے قبول اسلام سے اسلام کو طاقت نصیب ہوئی اسی لئے آپ کو مرادِ رسول کا لقب عطا ہوا۔سیمینار کے مہمان خصوصی مرزا ارشدالقادری نے کہا کہ جماعت صحابہ میں سیدنا فاروق اعظمؓ کو منفرد مقام حاصل ہے۔آپؓ کو حضوراکرم ؐ کے رفیق خاص کا درجہ حاصل تھا۔آپ کی جرات و بہادری اپنی مثال آپ اور عدل بے مثال تھا۔آپ ان صحابہ کرام میں شامل ہیں جنہیں حضوراکرم ؐنے جنت کی بشارت عطا فرمائی۔زمانہ جاہلیت میں بھی آپ کا شمار مکہ کے چند تعلیم یافتہ افراد میں ہوتا تھا۔علامہ قاری توفیق حامدی نے کہا کہ سیدنا فاروق اعظمؓ کشتہ محبت رسول ؐتھے۔آپ ہمیشہ گستاخانِ نبی پر سخت رہے۔آپ نے کبھی ناموس رسالت پر سمجھوتہ نہیں کیا۔محبت رسول میں آپ کی حمیت و غیر ت پوری امت کیلئے قابل تقلید نمونہ ہے۔سیمینار میں رکن الدین ندیم حامدی،پیر محمد مدنی رضوی، ڈاکٹر اشرف قریشی ایڈووکیٹ،علامہ عزیزالرحمن خان قادری،قاری غلام شبیر سواگی،حاجی اقبال یوسف نقشبندی،محبوب علی قادری،محمد افضل فرید چشتی،قاری اعجاز عطاری،شرافت علی،عبدالرزاق حامدی،رانا عثمان اصغر،صاحبزادہ عمران نقشبندی اور دیگر نے شرکت کی۔خطیب مسجد دربار حضرت شاہ رکن عالم ؒ علامہ غلام مصطفے محبوب ،صوبائی صدر جمیعت علماؤمشائخ پاکستان صوفی اقبال عادل قادری سابق ایم،پی،اے بابو نفیس احمد انصاری،رہنماء جماعت اہلسنت علامہ ریاض احمد سعیدی،خادم مشن اولیاء راجہ یونس بھٹی،نائب خطیب،دربار مسجد غوث بہاالدین زکریا علامہ غلام شبیر گولٹروی نے کہا ہے کہ امیر المومنین خلیفہ ثانی سید عمر فاروقؓکی سیرت وکردار اور زندگی کے سہنری اصول کو اپنا کر قائد نے قیام پاکستان کے لیے کامیاب جدو جہد کی،قائد وطن عزیز کو پیارے رسول اکرمؐکی شریعت اور خلفائے راشدین کے سنہری دور حکومت کا عملی نمونہ بنانا چاہتے تھے ۔سیدنا فاروق اعظم ؒ کا رعب اور دبدبہ ناصرف دشمنان اسلام بلکہ زمین و دریاؤ ں پر بھی تھا آپؓکی تعلیمات کو اپنا کر ہم قائد کے پاکستان کو پر امن مستحکم اور مثالی اسلامی ریاست بنا سکتے ہیں ،ان خیالات کا اظہار انہوں نے خلیفہ ثانی امیر المومنین سیدنا عمرؓ بن خطاب کے یوم شہادت اور بانی پاکستان حضرت قائد اعظم کے یوم وفات کے سلسلے میں مرکز ی انجمن محبان غوث اعظم پاکستان کے زیر اہتمام گزشتہ شب جامع مسجد چوک دہلی گیٹ سیدنا فاروق اعظمؓ اور قائد سیمنار سے خطاب کرتے ہوئے کیا اس موقع پر انجینئر صدرالدین گیلانی، سید حسن غیاث گیلانی ،شیخ فیاض احمد ، غلام رسول قادری ، حکیم ساجد حسن،ماسٹر ارشد قریشی،مولاناغلام نقشبندی،حافظ،علی احمد صابر ،محمد عربی سہروردی،بابر،علی قریشی اور محمد اکرم نے بھی خطاب وہدیہ نعت پیش کیا ،آخر میں دعائے خیر کی گئی۔ٹھٹھہ صادق آباد سے نمائندہ پاکستان کے مطابق خلیفہ دوم حضرت عمر فاروقؓ کا یوم شہاد ت گزشتہ روز یکم محرم الحرام کوملک بھر میں عقیدت واحترام کے ساتھ منایا گیا،تفصیل کے مطابق خلیفہ دوم حضرت عمر فاروقؓ کا یوم شہاد ت گزشتہ روز یکم محرم الحرام کو ملک بھر میں عقیدت واحترام کے ساتھ منایا گیا ،یوم شہادت حضرت عمر فاروقؓ کی مناسبت سے ملک بھر کے تمام چھوٹے بڑے شہروں کے اندر مرکزی مساجد،درسگاہوں،خانقاہوں میں خصوصی تقریبات کا اہتمام کرتے ہوئے سید نا حضرت عمر فاروقؓ کی اسلام کیلئے لاوزال قربانیوں و خدمات پر خراج تحسین پیش کیا گیا۔رحیم یار خان سے نمائندہ پاکستان کے مطابق خطیب مرکزی جامعہ مسجدنظامت ، ممبرضلعی امن کمیٹی اورجمعیت علماء اسلام(س) کے ضلعی جنرل سیکرٹری قاضی خلیل احمدنے کہاہے کہ حضرت فاروق اعظمؓ قیامت تک پوری دنیاکے حکمرانوں کے لیے رول ماڈل ہیں، جنہوں نے22لاکھ مربع میل تک اسلام کے جھنڈے کوسربلندرکھااورپورے ملک میں کوئی زکواۃ لینے والانہیں تھا، حضرت عمرفاروقؓ مرادرسولؐ ہیں۔ ان خیالات کااظہارانہوں نے حضرت سیدناعمرفاروقؓ کے یوم شہادت پرمنعقدہ سالانہ فاروق اعظم کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہاکہ حضرت عمرفاروقؓ کی ہیبت سے شیطان بھی راستہ چھوڑجاتاتھا، آپؓ نے 36شہروں کوفتح کیا، 900جامع مسجدتعمیرکروائیں، 4ہزارچھوٹی مسجدیں تعمیرکی، نہری نظام، ڈاک کانظام، بیت المال کاقیام، اقلیتوں کے حقوق، عدالتی نظام پولیس اورفوج کے نظام کوآپؓ نے دنیامیں معارف کروایا، غرض آج دنیاجس یورپی نظام کی تعریفیں کرتی ہے یہ سب حضرت عمرؓ کے نظام کی پیروی کانتیجہ ہے، انہوں نے کہاکہ بدقسمتی سے مسلم دنیاعدل اورانصاف کے نظام کورائج کرنے کابھی سوچ رہی ہے، حضورکریمؐ نے فرمایااللہ نے حق کوعمرکی زبان مں جاری فرمایا، 40احادیث حضرت عمرؓکی شان میں حضورنے ارشادفرمائیں،22مقامات قرآن پاک میں ایسے ہی جوحضرت عمرؓ نے سوچااللہ پاک نے قرآن میں نازل فرمادیا، انہوں نے کہاکہ یورپی مورخین کہتے ہیں اگرحضرت عمرؓ 10سال مزیدزندہ رہتے دنیامیں سوائے اسلام کے اورکوئی مذہب باقی نہ رہتا۔خانیوال سے بیورو نیوز کے مطابق سیدنا حضرت عمر فاروقؓ کی یوم شہادت اور دیگر خلفائے راشدین کے ایام وفات وشہادت پر عام تعطیل کا اعلان نہ کرنا احسان فراموشی کی بدترین مثال ہے خبیر پختونخوا ہ حکومت کو یکم محرم الحرام کی عام تعطیل کرنے پر خراج تحسین پیش کرتے ہیں اس معالمے میں دیگر صوبوں اور وفاق کو خیبر پختونخواہ حکومت کی تقلید کرنی چاہئے خبیر پختونخوا ہ حکومت نے یکم محرم الحرام کی عام تعطیل کرکے امت مسلمہ کا سر فخر سے بلند کردیا اس ختم نبوت ہمارے ایمان کا لازم ملزوم حصہ ہے اس کے ساتھ چھیڑ چھاڑ برداشت نہیں کی جائیگی ۔ ان خیالات کا اظہار ممبر صوبائی امن کمیٹی مولانا محمد عباس اختر ،مولانامحمد اکرم کھکھ و دیگر نے ڈسٹرکٹ پریس کلب میں اہلسنت والجماعت کے زیر اہتمام منعقدہ مرادِ پیغمبر سیدنا عمرفاروقؓ سیمینار خطاب کرتے ہوئے کیا ۔انہوں نے کہاکہ صحابہ کرامؓ اسلام اور مسلمانوں کے محسن ہیں رسول رحمت ؐ نے فرمایا کہ میرے صحابہ ستاروں کی مانند ہیں جس کی اقتداء کرو گے ہدایت پاؤ گے ۔ صحابہ کرام میں سے خلفائے راشدین اعلیٰ مقام پر فائز ہیں ۔سید نا فاروق اعظم کا دورخلافت مسلم حکمرانوں کیلئے بہترین نمونہ ہے سیدنافاروق اعظمؓ نے اپنے دور خلافت میں ریایہ پروری کی اعلیٰ مثالیں قائم کیں ۔اظہار رائے کی آزادی اور احتساب کی اعلیٰ مثالیں قائم کیں ۔انہوں نے کہاکہ پاکستان اسلام کے مقدس نام پر معرض وجود میں آیا مگر کسی بھی سطح پر اسلام اور اسلام کی معتبر شخصیات کو جگہ نہ مل سکی ۔ عالم کفر اسلام کے سنہری اصولوں اور خلفائے راشدین بہترین طرز عمل کو اپنانے پر مجبور ہے مگر مسلم حکمران مغرب کے لنڈا بازاروں کی طرف دیکھ رہے ہیں ۔انہوں نے مزید کہاکہ پاکستان میں بے حیائی، عریانی اورفحاشی کو فروغ دیا جارہا ہے جبکہ اسلام پسندوں کے گرد گھیرا تنگ کیا جارہا ہے انہوں نے مزید کہاکہ ختم نبوت ہمارے ایمان کا حصہ ہے قادیانیت کو پروان چڑھانے والوں کا عبرت ناک انجا م ہوگا اگر قادیانیوں کو آگے لانے کی کوششیں بند کی گئی تو حکومت یاد رکھے ہم وہی جنہوں نے قربانیاں دے کر قادیانیوں کو کافر قرار دلوایا تھا اور آج بھی ضرورت پڑی تو ہم کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے کیونکہ پاکستان کلمہ طیبہ کی بنیاد پر معرض وجود میں آیا جب تک اسلام کا نظام قائم نہیں ہوگا جب تک کفریہ طاقتوں کا مقابلہ کرنا انتہائی مشکل ہے ۔ انہوں نے مزید کہاکہ محبان وطن کو دیوار کے ساتھ لگایا جارہا ہے ۔مذہبی طبقہ کی زندگی اجیرن بنادی گئی ہے ۔انہوں نے مطالبہ کیا کہ خلفائے راشدین کے ایام شہادت و وفات پر عام تعطیل پاکستان کی غالب اکثریت کا مطالبہ ہے حکومت ان ایام پر تعطیل نہ کرکے سواد اعظم اہلسنت کے ساتھ سراسر ظلم اور ناانصافی کررہی ہے ۔وہاڑی سے بیورو رپورٹ،نامہ نگار کے مطابق یکم محرم الحرام امیرالمومنین حضرت عمرفاروق رضی اللّٰہ تعالٰی عنہ کے یوم شہادت کے موقع پرہرسال کی طرح گزشتہ روز بھی میونسپل کمیٹی وہاڑی میں سیمینارکاانعقادکیاگیاسیمینارمیں اہل تشیع مکتبہ فکرکے علماء کے ساتھ دیگر تینوں مسالک کے علماء کرام نے حضرت عمرفاروقؓ کوزبردست اندازمیں خراج عقیدت پیش کیا۔سیمنارمیں ایم پی اے میاں ثاقب خورشید،ڈپٹی کمشنرعرفان علی کا ٹھیا،ڈی پی اواحمدناصرعزیزورک،قاضی محمدوہاج،غلام قمبرعسکری،حافظ حبیب الرحمان،امتیازعالم،زاہداقبال چودھری،ارشادحسین بھٹی ، چیئرمین غلام مرتضیٰ ڈوگرودیگربھی شریک تھے۔سیمینارسے خطاب کرتے ہوئے ڈپٹی کمشنرعرفان علی کاٹھیانے کہاکہ وہاڑی میں حضرت عمرفاروقؓ کے یوم شہادت پرتمام مسالک کااتفاق واتحاد قابل تقلیدہے پورے صوبہ پنجاب میں ضلع وہاڑی کے علماکے درمیان موجوداتفاق واتحادکی مثالیں دی جاتی ہیں حضرت عمرچونکہ خودامن کے داعی تھے اورامن وامان کے حوالہ سے ان کے بنائے گئے قوانین اوراصول کوآج پوری دنیافالوکررہی ہے زونل خطیب اوقاف قاضی محمدوہاج کاکہناتھاکہ سیدناعمرفاروق کی زندگی ہمارے لئے مشعل راہ ہے ان کانبی اکرم ﷺ سے والہانہ عشق اتناتھاکہ کوئی بھی شخص نبی اکرم کے سنت کی خلاف ورزی کامرتکب پایاجاتاتو اپ کی تلوارحرکت میں آجاتی تھی وہاڑی کے تمام مکاتب فکرسے تعلق رکھنے والے علمااورعوام گزشتہ تین عشروں سے یکم محرم الحرام سیدناعمرفاروقؓ کی شہادت کی مناسبت سے مل کرسیمینارمنعقدکرتے آرہے ہیں جس میں بلاتفریق تمام مکاتب فکرکی شخصیات ان کوخراج عقیدت پیش کرنااپنے لئے باعث فخرسمجھتی ہیں ڈی پی اواحمدناصرعزیزورک نے سیمینارسے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ عاشورہ محرم الحرام کے دوران امن وامان بحال رکھناصرف پولیس اورانتظامیہ کی ذمہ داری نہیں ہے بلکہ ہرشہری اس کواپنی ذمہ داری سمجھے اوراپنے چاروں طرف نظررکھے جبکہ شرپسندعناصر پرکڑی نظررکھی جائے حضرت عمربہت بڑے امن پسند تھے بیت المقدس کی فتح ان کے امن پسندی کی بہت بڑی مثال ہے۔پی ٹی آئی کے راہنمازاہداقبال چودھری کاکہناتھاکہ عالم اسلام کے حکمران حضرت عمرکے بنائے گئے حکمرانی کے اصولوں پرعمل پیراہوجائے توپوری دنیامیں امن کادور دورہ ہوجائے۔سیمینارسے ممتازشیعہ عالم دین غلام قمبرعسکری کاکہناتھاکہ صحابہ کرام کی عزت واحترام ہمارے ایمان کالازمی جزہے جوشخص حضرت عمراورصحابہ کرام کااحترام نہیں کرتااس کوشیعہ نہیں سمجھتا صحابہ کرام کی فضیلت کاانکارممکن نہیں سیمینارسے صدرمرکزی انجمن تاجران ارشادحسین بھٹی،حافظ حبیب الرحمان ضیاء،امتیازعالم ودیگرنے بھی خطاب کیا۔

مزید : ملتان صفحہ آخر