محکمہ صحت کے مسائل حل کرنے کی کوشش کررہے ہیں،عذرا پیچوہو

محکمہ صحت کے مسائل حل کرنے کی کوشش کررہے ہیں،عذرا پیچوہو

کراچی (اسٹاف رپورٹر)صو با ئی وزیر صحت و پا پو لیشن ویلفیئر ڈاکٹر عذرا فضل پیچو ہو نے کہا ہے کہ محکمہ صحت ایک مشکل محکمہ ہے اور اس کو متعدد مسائل کا سامنا ہے تا ہم میری پو ری کو شش ہو گی کہ مسائل پر قا بو پا کر محکمہ میں بہتری لا ئی جا ئے اور محکمہ کی بہتری کے لئے ما ہرین کی آرا کا احترا م کرتے ہو ئے اصلا حا ت کا عمل شرو ع کیا جا رہا ہے ۔یہ با ت انہوں نے اپنے دفتر میں ایک پریس کا نفرنس سے خطا ب کرتے ہو ئے کہی ۔انہو ں نے کہا کہ ویکسینیٹرز اور لیڈی ہیلتھ وزیٹرز اور محکمہ کے دیگر ملا زمین کی کا ر کردگی کو جا نچنے کے لئے ایک جا مع ما نیٹرنگ پرو گرا م تر تیب دیا جا رہا ہے ۔جبکہ بچوں کو حفاظتی ٹیکو ں کے پروگرا م پر بھی احسن طریقے سے کا م کیا جا رہا ہے تا کہ بچو ں کو بیما ریو ں سے بچا یا جا سکے ۔انہو ں نے مزید کہا کہ حفا ظتی ٹیکو ں کے پرو گرام کے ملا زمین کو انکی کا ر کردگی ما نیٹرکر نے کے لئے انکو اسما ر ٹ فو ن دیئے جا ئیں گے تا کہ وہ اپنے کا م میں مزید فعا ل ہو جا ئیں ۔صو با ئی وزیر صحت ڈاکٹر عذرا پیچو ہو نے کہا کہ اسپتا لو ں کے میڈیکل سپرنٹنڈنٹ سمیت تما م اہم اسا میو ں پر ٹیسٹ لیکر تعیناتی کی جا ئے گی اور اب محکمہ صحت میں سفا رش نہیں چلے گی ۔انہو ں نے کہا کہ پبلک پرا ئیوٹ پا ر ٹنر شپ کے تحت کئے جا نیوالے معا ہدے پر نظر ثا نی کی جا ئے گی ۔جبکہ زچہ و بچہ کی پیدا ئش کے وقت شرح اموات پر قا بو پا نے کی ہر ممکن کو ش کی جا رہی ہے ۔انہو ں نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ سندھ کے عوام رو شن خیا ل ہیں اور وہ یہ سمجھتے ہیں کہ بچو ں کی پیدا ئش میں ایک منا سب وقفہ ہو نا چا ہئے تا کہ بڑھتی ہو ئی آبا دی پر قابو پا یا جا سکے اور محکمہ صحت کے ساتھ ساتھ محکمہ پا پو لیشن کو بھی بہتر بنا یا جا ئے گا ۔صو با ئی وزیر صحت نے کہا کہ محکمہ صحت کے زیر اہتما م چلنے والے تما م ور ٹیکلز پرو گرا مز کو آئیندہ ما لی سال میں ریگو لر کیا جا سکے ۔انہو ں نے کہا کہ حا ل ہی میں کئی سرکاری اسپتا لو ں کا دورہ کیا ہے اور وہ انکی کا ر کردگی سے مطمئن نہیں ہیں اور ملا زمین کی حا ضری کو یقینی بنا نے کیلئے با ئیو میٹرک سسٹم متعا رف کرا یا گیا ہے اور ان ملا زمین کو کہا گیا ہے کہ وہ 15ستمبر تک اپنی با ئیو میٹرک مکمل کروا لیں ورنہ انکے خلا ف کا روائی کی جا ئے گی ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر