مظفرآباد، پرائیویٹ سکولز مالکان نے بچوں کے والدین کو اے ٹی ایم مشین بنا لیا

مظفرآباد، پرائیویٹ سکولز مالکان نے بچوں کے والدین کو اے ٹی ایم مشین بنا لیا

مظفرآباد(بیورورپورٹ) مظفرآباد ڈویژن میں پرائیویٹ سکولز کے مالکان نے بچوں کے والدین کو اے ٹی ایم مشین بنا لیا ہے ۔ آئے روز نئے ناموں سے پروگرام اور مختلف ناموں پر فنڈز نے والدین کو چکرا کر رکھ دیا حکومت آزاد کشمیر ، وزیر تعلیم نوٹس لیں ۔ ہر پرائیویٹ سکولز بچوں سے ماہانہ فیس کے علاوہ سال بھر کا 10سے 15ہزار دیگر فنڈز چارج کی مد میں وصول کرتا ہے آخر کیوں والدین کی اکثر شکایات رہتی ہیں کہ سیکورٹی کے نام پر فی بچہ 50سے 100روپے وصول کئے جاتے ہیں مگر نصف سے زائد پرائیویٹ سکولز میں سیکورٹی گارڈز تعینات نہیں ہوتا اگر کوئی والدین سیکورٹی گارڈز کے حوالہ سے بات کرے تو اسے کہا جاتا ہے کہ ہمارے اتنے وسائل نہیں اگر وسائل نہیں تو سیکورٹی کے نام بچوں سے رقم کیوں وصول کی جاتی ہے ؟ والدین کا کہنا ہے کہ سرکاری سکولز کی طرح پرائیویٹ تمام سکولز کی طرح پرائیویٹ تمام سکولز کیسے بھی حکومتی سطح پر قانون سازی کی جائے تاکہ والدین لوٹ مار سے بچ سکیں ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر