تحریک انصاف کی حکومت کا عوام کے خلاف سب سے خوفناک فیصلہ ، جان کر ہر پاکستانی کے واقعی ہوش اڑ جائیں گے

تحریک انصاف کی حکومت کا عوام کے خلاف سب سے خوفناک فیصلہ ، جان کر ہر پاکستانی ...
تحریک انصاف کی حکومت کا عوام کے خلاف سب سے خوفناک فیصلہ ، جان کر ہر پاکستانی کے واقعی ہوش اڑ جائیں گے

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن ) حکومت نے ایک کھرب روپے کے لگ بھگ اضافی ریونیو حاصل کرنے کیلئے منی بجٹ متعارف کروانے کا فیصلہ کر لیاہے ۔

تفصیلات کے مطابق وفاقی حکومت نے منی بجٹ کی سمری تیاری کر لی ہے جو کہ آج وفاقی کابینہ کے اجلاس میں پیش کی جائے گی اور منظوری کے بعد اسے قومی اسمبلی میں پیش کیا جائے گا ۔

حکومت کے اس فیصلے کے بعد ٹویٹر پر بھی ہنگامہ برپاہے ، سینئر صحافی مبشر زیدی نے ٹویٹر پر پیغام جاری کرتے ہوئے لکھا کہ ”پی ٹی آئی کی حکومت منی بجٹ میں 150 بلین روپے سے زائد کے اضافی ٹیکسز لگانے جارہی ہے ۔“

اسفند نامی ٹویٹر صارف کا کہناتھا کہ ” نیا فنانس بل جو کہ ممکنہ طور پر منگل کے روز آنے والا ہے ، جس میں تنخواہ دار حلقہ کو دیئے گئے ٹیکس ریلیف کے فیصلے کو واپس لیے جانے کا امکان ہے ۔یہ بہت ہی دلچسپ ہے کیونکہ گزشتہ سال میں نے عمران خان سے زیادہ ٹیکس ادا کیا ہے ،انہوں نے 4 لاکھ بیس ہزار روپے دیا تھا ۔

سوشل میڈیا پر منی بجٹ کے حوالے سے جنگ سی چھڑ چکی ہے ۔ صارف کا کہناتھا کہ جو بلین ڈالرز واپس لانے تھے اگر وہ آجائیں تو شائد ٹیکسز بڑھانے کی ضرورت نہ پڑے ، خان صاحب کو اپنی کسی بات پر تو کھڑا ہونا چاہیے ۔

ہانیہ نامی خاتون صارف نے پورے منظر کو بس ایک نعرے میں ہی بیان کر دیا کہ ” روک سکو تو روک لو تبدیلی آئی رے ۔“

دوسری جانب نجی ٹی وی ایکسپریس نیوز کا کہناہے کہ وفاقی حکومت کے نظر ثانی شدہ بجٹ میں تنخواہ دار ملازمین کیلئے قابل ٹیکس آمدنی کی حد 12 لاکھ روپے سے کم کرکے 8 لاکھ روپے کرنے کا امکان ہے جب کہ ریگولیٹری ڈیوٹی کی شرح میں 5 فیصد تک اضافے سے موبائل فونز کی قیمتیں بڑھ جائیں گی۔آٹے کی برآمد پر بھی 5 فیصد ڈیوٹی عائد کیے جانے کا امکان ہے، وفاقی ترقیاتی پروگرام میں 380 ارب روپے کی غیرمنظور ش±دہ ترقیاتی سکیمیں ختم کرنے کی تجویز شامل ہے۔

مزید : قومی