ایپل نے اپنی تاریخ کا سب سے مہنگا فون متعارف کروا دیا، کیسا دِکھتا ہے اور فیچرز کیا ہیں؟ آپ بھی جانئے

ایپل نے اپنی تاریخ کا سب سے مہنگا فون متعارف کروا دیا، کیسا دِکھتا ہے اور ...
ایپل نے اپنی تاریخ کا سب سے مہنگا فون متعارف کروا دیا، کیسا دِکھتا ہے اور فیچرز کیا ہیں؟ آپ بھی جانئے

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) ایپل نے گزشتہ روز اپنے تین نئے آئی فون ماڈلز متعارف کروا دیئے ہیں جن میں ایک ماڈل ایپل کی تاریخ کا سب سے مہنگا فون ہے۔ اس ماڈل کا نام ’آئی فون ایکس ایس میکس‘ہے جس کی قیمت 1ہزار 99ڈالر (تقریباً 1لاکھ 34ہزار 800روپے) سے شروع ہوتی ہے۔ اس ماڈل میں آئی فونز کی اب تک کی سب سے بڑی ’سپر ریٹینا‘ سکرین بھی نصب کی گئی ہے جو 6.5انچ ہے۔ اس سے قبل کسی آئی فون ماڈل میں اتنا بڑا ڈسپلے نہیں دیا گیا۔اس کے ساتھ آئی فون ایکس ایس بھی متعارف کروایا گیا ہے جس کا ڈسپلے 5.8انچ ہے۔ اس کی قیمت 999ڈالر (تقریباً 1لاکھ 22ہزار500روپے) سے شروع ہوتی ہے۔ ان دونوں ماڈلز میں تیز ترین پراسیسنگ کے لیے ایپل کی ’اے12بائیونک چِپ‘ (A12 Bionic Chip)نصب کی گئی ہے۔کمپنی کا یہ بھی کہنا ہے کہ ان ماڈلز میں ’فیس آئی ڈی‘ بھی گزشتہ ماڈلز کی نسبت کئی گنا زیادہ تیز اور زیادہ محفوظ ہے۔تیسرا ماڈل ’آئی فون ایکس آر‘متعارف کروایا گیا ہے جو ان دونوں ماڈلز کی نسبت قدرے سستا ہے۔ اس کی قیمت 749ڈالر(تقریباً 91ہزار 800روپے) سے شروع ہوتی ہے۔ اس آئی فون کاڈسپلے 6.1انچ ہے۔

ایپل کے چیف ایگزیکٹو آفیسر ٹم کک کا ان ماڈلز کی تعارفی تقریب میں کہنا تھا کہ ’’آئی فون ایکس ایس اور آئی فون ایکس ایس میکس دو ایسے ماڈلز ہیں کہ اتنے جدید ترین ماڈل ایپل نے پہلے نہیں بنائے۔ یہ سابق تمام ماڈلز کی نسبت زیادہ واٹرپروف بھی ہیں اور پانی کے اندر 2میٹر گہرائی میں 30منٹ تک محفوظ رہ سکتے ہیں۔ان میں پہلے سے تیز پراسیسر اور پہلے سے بہتر بیٹری نصب کی گئی ہے جس کی لائف آئی فون ایکس کی نسبت ڈیڑھ گھنٹہ زیادہ ہے۔آئی فون ایکس ایس میکس میں ’ڈیول 12میگاپکسل بیک‘ اور ’ڈیول 7میگا پکسل فرنٹ‘ کیمرا لگایا گیا ہے۔یہ ماڈل64جی بی، 256جی بی اور 512جی بی میموری کے ساتھ تین رنگوں گولڈ، سلور اور سپیس گرے میں دستیاب ہوں گے۔رپورٹ کے مطابق اس تقریب میں کمپنی نے سیریز 4ایپل واچ بھی متعارف کروائی۔ اس کے متعلق ایپل کے چیف آپریٹنگ آفیسر جیف ویلیمز کا کہنا تھا کہ ’’اس ایپل واچ میں سکرین 30فیصد بڑی کی گئی ہے اور دیگر کئی چھوٹی چھوٹی تبدیلیاں کی گئی ہیں۔ یہ ماڈل سابق ایپل واچ ماڈلز کی نسبت کافی پتلا بھی بنایا گیا ہے۔ یہ گھڑی جس شخص نے پہن رکھی ہو گی، اگر وہ کہیں گرے گا تو گھڑی اسے ڈی ٹیکٹ کر لے گی اور ایمرجنسی رابطہ نمبروں پر خودکار طریقے سے اس کی اطلاع دے دے گی۔‘‘

مزید : سائنس اور ٹیکنالوجی