برصغیر کے سب سے بڑے دینی ادارے نے طالب علموں پر ایسی پابندی عائد کر دی کہ کوئی سوچ بھی نہ سکتا تھا ،ہر کوئی حیران رہ گیا

برصغیر کے سب سے بڑے دینی ادارے نے طالب علموں پر ایسی پابندی عائد کر دی کہ کوئی ...
برصغیر کے سب سے بڑے دینی ادارے نے طالب علموں پر ایسی پابندی عائد کر دی کہ کوئی سوچ بھی نہ سکتا تھا ،ہر کوئی حیران رہ گیا

  

دیوبند(ڈیلی پاکستان آن لائن)برصغیر پاک و ہند کی مشہور و معروف دینی درسگاہ’’دارالعلوم دیوبند ‘‘ نے جامعہ میں زیر تعلیم طلبا کے سمارٹ فون استعمال کرنے پر پابندی عائد کر دی ہے۔

بھارتی میڈیا کے مطابق ہندوستان کی مشہور اسلامی درسگاہ دارالعلوم دیوبندنے اپنے طالب علموں پر سمارٹ فون کا استعمال کرنے پر پابندی عائد کردی ہے۔ دارالعلوم کے مہتمم مفتی ابو القاسم نعمانی نے حکم نامہ جاری کرتے ہوئے جامعہ میں زیر تعلیم طالب علموں کو وارننگ دیتے ہوئے کہا ہے کہ اگر کسی بھی طالن علم کے پاس سمارٹ فون پایا گیا تو اس کو فوری طور پر ادارے سے نکال دیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ طالب علموں کو سمارٹ فون کو اپنے گھر میں رکھنا چاہیے،اگر کوئی طالب علم ادارے میں اس کا استعمال کرتے ہوئے نظرآیا تو اس کے خلاف سخت ترین کارروائی کی جائے گی۔مفتی ابو القاسم نعمانی کا کہنا تھا کہ سمارٹ فون سے پڑھائی میں رکاوٹ پیدا ہوتی ہے اور اس سے تعلیم کا معیار بھی متاثر ہوتا ہے اس لئے دارالعلوم دیوبند نے جامعہ میں زیر تعلیم طلبا ء کے سمارٹ فون استعمال کرنے پر مکمل پابندی عائد کر دی ہے ۔واضح رہے کہ ہندوستان میں قائم دارالعلوم دیوبند کا شمار عالم اسلام کے مشہور دینی و علمی مراکز میں ہوتا ہے۔ بر صغیر پاک و ہندمیں اسلام کی نشر و اشاعت کا یہ سب سے بڑا ادارہ اور دینی علوم کی تعلیم کا سب سے بڑا سرچشمہ ہے، یہاں سے فارغ التحصیل علماء اور فضلاء بھارت سمیت پوری دنیا میں علمی و دینی خدمات انجام دے رہے ہیں اور ہر جگہ ان کو ممتاز حیثیت سے مسلمانوں کی دینی رہ نمائی کا مقام حاصل ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس