گاﺅں والوں کی جانب سے جوش دلانے پر آدمی نے زندہ سانپ کھالیا، پھر کیا ہوا؟ جان کر ہی آپ کانپ اُٹھیں گے

گاﺅں والوں کی جانب سے جوش دلانے پر آدمی نے زندہ سانپ کھالیا، پھر کیا ہوا؟ جان ...
گاﺅں والوں کی جانب سے جوش دلانے پر آدمی نے زندہ سانپ کھالیا، پھر کیا ہوا؟ جان کر ہی آپ کانپ اُٹھیں گے

  

نئی دلی(نیوز ڈیسک)نشہ ایک لعنت ہے، یہ بات آپ نے ضرور سن رکھی ہو گی، اور اسے انسان کے لئے زہر بھی کہا جاتا ہے، کیونکہ منشیات انسانی صحت کو برباد کر دیتی ہیں۔اگرچہ یہی نقصانات کچھ کم نہیں مگر نشہ انسان کو عقل و شعور سے بھی محروم کر دیتا ہے، یہاں تک کہ اُسے اپنی جان جیسی قیمتی متاع کی بھی فکر نہیں رہتی۔ اگر کسی کو یہ الفاظ محض کتابی باتیں لگتی ہیں تو اُسے بھارتی ریاست اترپردیش میں پیش آنے والے اس عبرتناک واقعے کے بارے میں ضرور جاننا چاہیئے، جہاں ایک آدمی نشہ کرنے کے بعد عقل و شعور سے ایسا بیگانہ ہوا کہ لوگوں کے اُکسانے پر سانپ کھا گیا، اور ظاہر ہے کہ یہ حماقت جان لیوا ثابت ہوئی۔

ٹائمز آف انڈیا کے مطابق 40 سالہ ماہی پال سنگھ نشے کی زیادتی کے باعث اپنے ہوش و حواس سے بیگانہ ہو رہا تھا اور سڑک پر دندناتا پھر رہا تھا۔ اسی دوران اسے سڑک کنارے ایک چھوٹا سانپ نظر آیا تو اُسے اٹھا لیا۔ وہ کبھی سانپ کو ہوا میں اچھالتا اور کبھی ادھر سے اُدھر پھینکنے لگتا۔ اسی دوران وہاں موجود کچھ بے حس لوگ اُسے سانپ کے ساتھ مختلف قسم کے کرتب کرنے پر اُکسانے لگے۔ کسی کے کہنے پر اُس نے سانپ کو اپنے سر پر رکھا لیکن پھر کسی نے کہا کہ وہ اتنا بہادر ہے تو اسے اپنے منہ میں رکھ کر دکھائے۔ ماہی پال تو نشے میں دھت ہو کر عقل سے پوری طرح عاری ہو چکا تھا۔ اُس نے یہ چیلنج بھی قبول کیا اور سانپ کو اپنے منہ میں ڈال لیا، مگر اگلے ہی لمحے یہ سانپ اس کے گلے سے اترتا ہوا پیٹ میں چلا گیا۔

زندہ سانپ کو کھاتے ہی اس کی طبیعت بری طرح بگڑنے لگی۔ وہ مسلسل تڑپتا رہا اور بار بار قے کرتا رہا مگر سانپ باہر نہ آیا۔ اُسے ہسپتال لیجایا گیا مگر ڈاکٹروں کی تمام تر کوششوں کے باوجود چار گھنٹے بعد اُس کی موت ہو گئی۔ بدقسمت شخص نے سوگواران میں بیوہ اور چار بچے چھوڑے ہیں، جن میں سے ایک بیٹا اور تین بیٹیاں ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس /بین الاقوامی