عدالتوں میں ڈسپلن کا خیال رکھاجائے، ججرپرانے مقدمات کوترجیحی بنیادوں پر نمٹائیں

عدالتوں میں ڈسپلن کا خیال رکھاجائے، ججرپرانے مقدمات کوترجیحی بنیادوں پر ...

لاہور(نامہ نگار)ڈسٹرکٹ اینڈسیشن جج لاہور قیصر نذیر بٹ نے کہاہے کہ عدالتوں میں ڈسپلن کا خیال رکھا جائے اور عملے کو ہدایت کی جائے کہ وہ بغیر یونیفارم کے نہ آئیں، جو یونیفارم کے بغیر آئے اس کو سزا دی جائے اور تمام ایڈیشنل سیشن جج صاحبان پرانے مقدمات کو ترجیحی بنیادوں پر نمٹائیں،ان خیالات کا اظہار ڈسٹرکٹ اینڈسیشن جج نے اپنی صدارت میں لاہور کے تمام ایڈیشنل سیشن ججوں کا اجلاس کے دوران کیا۔اجلاس میں کارکردگی رپورٹ بھی پیش کی گئی، ڈسٹرکٹ اینڈسیشن جج نے کہا کہ لاہور کے تمام ایڈیشنل سیشن ججوں کے کارکردگی کا ماہانہ جائزہ لیا گیا،اس موقع پر تمام ایڈیشنل سیشن ججوں نے اپنی عدالتوں میں کئے جانے والے فیصلوں سے آگاہ کیا، دسٹرکٹ اینڈسیشن جج نے تمام ایڈیشنل سیشن ججوں کو پرانے مقدمات کو ترجیحی بنیادوں پر نمٹانے کی ہدایت کی اورخاص طور پر قتل، منشیات اور اوورسیز پاکستانیوں کی ماڈل کورٹس کے ججز کو ہدایت کی کہ وہ اپنی کارکردگی کو مزید بہتر کریں اور پہلے پرانے کیسوں کا نمٹائیں، اس کے علاوہ کوشش کریں کہ جو گواہ ایک بار کمرہ عدالت میں آ جائے، اس کو بغیر بیان کے نہ جانے دیا جائے کیونکہ آج کل کے ماحول میں گواہ کا سارے کام چھوڑ کر آنا مشکل ہوتا ہے،کوشش کی جائے کہ اس کو بیان قلمبند کرنے اور جرح کے بعد فارغ کیا جائے، وکلا سے بھی درخواست کریں کہ جو گواہ آیا کم از کم اس کو مکمل کریں۔

مزید : علاقائی


loading...