ایبٹ آباد میں سہ روزہ انڈسٹریل کانفرنس آئندہ ماہ منعقد ہوگی 

ایبٹ آباد میں سہ روزہ انڈسٹریل کانفرنس آئندہ ماہ منعقد ہوگی 

ایبٹ آباد(ڈسٹرکٹ رپورٹر) کمشنر ہزار ہ ڈویژن سید ظہیر الاسلام نے بتایا ہے کہ ہزارہ ڈویژن میں صنعتکاری کے فروغ اور ہنر مند نوجوانوں کے لئے روزگار کے مواقع تلاش کرنے کی غرض سے ایک تین روزہ انڈسٹریل کانفرنس آئندہ ماہ ایبٹ آباد میں منعقد کی جائے گی۔ کانفرنس میں ہزارہ ڈویژن کے علاوہ ملک بھر کے صنعت کاروں،سرمایہ کاروں، تاجروں، ماہرین صنعت ومعاشیات،صنعت و تجارت سے متعلقہ محکموں اور اداروں، نوجوانوں کے نمائندوں، ماہرین تعلیم اور خصوصاسیاحت، معدنیات اور ہائیڈل پاور کے شعبوں سے تعلق رکھنے والے اداروں کے نمائندوں کو شرکت کی دعوت دی جائے گی۔ یہ اعلان انہوں نے جمعرات کے روز کمشنر ہاؤس میں صنعتکاری کانفرنس سے متعلق اعلیٰ سطحی اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا جس میں ایبٹ آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے عہدیداروں اور صنعتکاروں کے علاوہ محکمہ صنعت و معدنیات،ایبٹ آباد یونیورسٹی،کامیسٹس،ووکیشنل و ٹیکنیکل کالجوں کے سربراہوں،جی ڈی اے،اے ڈی اے،سی اینڈ ڈبلیو،کنٹونمنٹ بورڈ،ٹی ایم اے اور دیگر متعلقہ محکموں کے افسران نے شرکت کی۔اجلاس کے دوران مجوزہ صنعتی کانفرنس کے انعقاد کے لئے انتظامات کا تفصیلی جائزہ لیا گیا اور تمام متعلقہ محکموں اور اداروں کی ذمہ داریوں کا تعین کیا گیا جبکہ کمشنر ازارہ نے اس سلسلے میں ایبٹ آباد چیمبر آف کامرس کے صدر افتخار احمد کی سربراہی میں ایک کمیٹی بھی تشکیل دی۔کمشنرہزارہ سید ظہیر الاسلام نے اجلاس میں کانفرنس کے اغراض و مقاصد واضح کرتے ہوئے بتایا کہ خیبرپختونخوا حکومت کی ہدایت پرصنعت کاری کے فروغ کے لیے صوبے کے تمام ڈویژنل ہیڈ کوارٹرز میں کانفرنسیس منعقد کی جا رہی ہیں اور ایبٹ آباد میں بھی تین روزہ کانفرنس کا انعقاد اسی سلسلے کی ایک کڑی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایبٹ آباد میں صنعتی کانفرنس کا انعقاد دیگر ڈویژنوں کی نسبت زیادہ اہمیت کا حامل ہے کیونکہ ہزارہ ڈویژن معدنیات،سیاحت اور ہائیڈرو پاور کے وسائل سے مالا مال خطہ ہے جس کی وجہ سے ان شعبوں میں یہاں سرمایہ کاری اور صنعت کاری کے وسیع امکانات موجود ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں ان وسائل سے بھرپور فائدہ اٹھا کر انہیں پورے ملک کی اقتصادی ترقی کے لیے مفید بنانے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ بدقسمتی سے ہمارے نوجوان فنی تعلیم حاصل کرکے روزگار کے لئے بیرون ملک جانے پرمجبور ہیں اور صنعت کاری کو فروغ دے کر ان نوجوانوں کے لیے ملک کے اندر ہی روزگار کا بندوبست کیا جا سکتا ہے۔کمشنر ہزارہ نے مزید کہا کہ سی پیک کے تحت ہزارہ ڈویژن میں چائناکی صنعت کاری کے بھی وسیع امکانات موجود ہیں اس لئے چائنا سے مقابلے کے لئے ہمیں اپنی صنعتوں کو بہتر بنانے کی ضرورت ہوگی۔ انہوں نے شرکاء پر زور دیا کہ وہ کانفرنس کو کامیاب بنانے کے لیے تمام دستیاب وسائل استعمال کریں تاکہ ہزارہ میں صنعت کاری کے فروغ اور بے روزگاری کے خاتمے کے لیے کارآمد اور قابل عمل سفارشات اور تجاویز مرتب کی جا سکیں جن پر صوبائی حکومت یقینی عمل درآمد کرے گی۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...