افسران، ماتحت عملہ نے فرضی ناموں پر کروڑوں ڈکا ر لیے، متاثرین در بدر

  افسران، ماتحت عملہ نے فرضی ناموں پر کروڑوں ڈکا ر لیے، متاثرین در بدر

بہاولپور(ڈسٹرکٹ رپورٹر)وزیراعظم کسان پیکیج کرپشن سیکنڈل بہاولپورمیں افسران اورماتحت عملہ نے فرضی ناموں پرکروڑوں غبن کرلیے کمشنر آفس میں 14 ہزار سے زائد درخواستیں ردی کی ٹوکری کی نظرہوگئیں کرپشن میں اسسٹنٹ کمشنر صدر کادفتر سرفہرست رہااے سی صدرنے کسانوں کوامدادی چیکوں کی فراہمی کے اخراجات کی آڑمیں بھی خزانہ سرکار سے60 لاکھ روپے نکلواکرڈکارلیے گئے نیب سے فوری ریکارڈقبضہ میں لے کر(بقیہ نمبر10صفحہ12پر)

کاروائی کرنے کامطالبہ تفصیل کے مطابق سابق وزیراعظم پاکستان محمدنوازشریف کسانوں کی کپاس اوردھان کی فصلیں خراب ہوجانے پرفی ایکڑ پانچ ہزار روپے امدادی رقوم دینے کاپراجیکٹ شروع کیاتھااس طرح کسانوں کواربوں روپے کی امدادی رقوم دیناتھیں لیکن متعلقہ انتظامیہ نے پٹواریوں اوردفتری اہلکاروں سے ملی بھگت کرکے جعلی سروے تیارکیے مستحق کسانوں کوامدادی رقوم سے محروم رکھ کردفتری اہلکاروں اورافسران نے اپنے تعلق داروں اوررشتہ داروں کے نام متاثرین کاشتکاران کی فہرست میں شامل کرکے کروڑوں روپے سرکاری خزانے سے نکلواکرہضم کرلیے اس کے علاوہ کاشتکاروں کوامدادی رقوم کے چیک تقسیم کرنے پرآنیوالے اخراجات بھی کئی گنابڑھاکرسرکاری خزانے سے نکلواکرہضم کرلیے سب سے زیادہ فراڈ میں ملوث سابق اسسٹنٹ کمشنر صدربہاولپوررائے عبدالحفیظ بھٹی نکلے جوکہ60 لاکھ روپے کے بوگس بلزپاس کراکربینک سے نکلواتے ہوئے پکڑے گئے اوراینٹی کرپشن نے مقدمہ بھی درج کیاذرائع کاکہناہے کہ فراڈ بے نقاب ہونے پرحکومت نے متاثرہ کاشتکاروں سے شکایات پرمبنی درخواستیں طلب کیں توبہاولپورضلع سے کمشنر آفس میں جمع کرائی جانیوالی درخواستوں کی تعداد14 ہزار سے زائد تھی جن پرکوئی عمل درآمد نہ ہواتھابلکہ ردی کی ٹوکری کی زنیت بنادیاگیاتھامتاثرہ کاشتکاروں عوامی وسماجی حلقوں نے چیئرمین نیب اوردیگرارباب اختیار سے سخت نوٹس لینے کامطالبہ کیاہے۔

کرپشن سکینڈل

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...