پی ایس ایل کا چاند پھر چمکے گا

 پی ایس ایل کا چاند پھر چمکے گا

  

پاکستان کرکٹ بورڈنے پی ایس ایل 2020 کے بقیہ میچوں کے شیڈول کا اعلان کردیا،ایونٹ کے چاروں بقیہ میچز 14، 15اور 17نومبرکو لاہور میں کھیلے جائیں گے۔ چودہ نومبر کو ایونٹ کا کوالیفائر اور ایلمنٹر ون، ڈبل ہیڈر کی بنیاد پر کھیلے جائیں گے۔ اس کے اگلے روز ایلمنٹر ٹو جبکہ فائنل17 نومبر کو ہوگا، کوویڈ19 کے سبب ایونٹ کے  بقیہ میچز 17 مارچ کو ملتوی کردئیے گئے تھے۔ ایونٹ کے بقیہ میچوں کی تاریخوں کو چاروں ٹیموں  ملتان سلطانز، کراچی کنگز، لاہور قلندرز اورپشاور زلمی کی مشاورت سے حتمی شکل دی گئی ہے جبکہ میچوں کے آغاز کا وقت بعد میں جاری کیا جائے گا۔ایونٹ کے بقیہ چاروں میچز کوویڈ 19 پروٹوکولز کے تحت کھیلے جائیں جہاں تمام کھلاڑی، میچ آفیشلز اور متعلقہ اسٹاف بائیو سیکیور ماحول میں رہے گا۔فی الحال  چاروں میچز بند دروازوں میں کھیلے جانے کا پلان ہے تاہم اس حوالے سے  حتمی فیصلہ اکتوبر میں ہو گا۔پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیف ایگزیکٹو وسیم خان کا کہنا ہے کہ اس اعلان کے بعد نہ صرف تمام قیاس آرائیاں دم توڑ جائیں گی بلکہ اب ان  میچوں کی تیاری کے لیے تمام ٹیموں کے پاس بھی مناسب وقت موجود ہے، فی الحال سب سے اہم یہ تھا کہ ٹورنامنٹ میں شریک یہ ٹیمیں ان تاریخوں کو اپنی ڈائری میں درج کرلیں۔وسیم خان نے کہا کہ پی سی بی شروع سے ہی ان چاروں میچوں کے انعقاد کے لیے پرعزم تھااور پی سی بی کے خیال میں پی ایس ایل جیسے ایونٹ کا فاتح ضرور سامنے آنا چاہیے۔، ہم نے رواں سال کے آغاز میں ایونٹ کے لیے بھرپور جوش و خروش دیکھا اور ہم پرامید ہیں کہ ان بقیہ میچوں سے قبل بھی مداحوں کے لیے تشہیری مہم کا آغاز ہوگا۔  انہوں نے مزید کہا کہ پی ایس ایل 2020 کے بقیہ چاروں میچوں کے انعقاد کااعلان اس بات کی بھی تائید ہے کہ پاکستان کوویڈ 19 کی وباء  پر قابو پانے میں کامیاب ہوگیا ہے، دیگر کھیلوں کی طرح کرکٹ کے ڈومیسٹک سیزن 21-2020 کا آغاز بھی جلد ہورہا ہے جہاں مختلف ایج گروپس، مینز اور ویمنز کرکٹ کے  مقابلوں سمیت زمباوے اور جنوبی افریقہ کے ساتھ ہوم سیریز بھی کھیلی جائیں گی۔ڈومیسٹک سیزن 21-2020 کے میچوں کا کامیاب انعقاد آئندہ سال فروری، مارچ میں ایچ بی ایل پی ایس ایل 2021 کے لیے معاون  ثابت ہوگا، ہم عوام کے چہروں پر خوشیاں بانٹنے کے منتظر ہیں۔ایچ بی ایل پی ایس ایل کے بقیہ میچوں میں شامل چار ٹیموں میں سے صرف پشاور زلمی ہی اس سے قبل ایونٹ کی فاتح رہ چکی ہے۔ ایچ بی ایل پی ایس ایل 2020، ایشیاء کپ 2008 کے بعد پاکستان میں منعقدہ  دوسرا بڑا ٹورنامنٹ ہے۔ایونٹ کی کْل انعامی رقم 10 لاکھ امریکی ڈالر مقرر ہے۔ ایونٹ کی فاتح ٹیم کو ٹرافی کے علاوہ پانچ لاکھ امریکی ڈالر کی انعامی رقم دی جائے گی۔ رنرزاپ کے لیے 2 لاکھ امریکی ڈالر کی رقم مقرر ہے۔جبکہ  دوسری جانب پاکستان کرکٹ بورڈ کی کرکٹ کمیٹی کو 30ستمبر سے قبل پاکستانی ٹیم کے ہیڈ کوچ مصباح الحق کوطلب کرکے ٹیم کی مسلسل خراب کارکردگی اور انگلینڈ کے دورے پر باز پرس کرنی ہے۔ حیران کن طور پر اقبال قاسم کے استعفیٰ کے بعد کرکٹ کمیٹی غیر فعال ہے۔ پی سی بی کو ایسے چیئرمین کرکٹ کمیٹی کی تلاش ہے جو مصباح الحق کی طرح نرم مزاج اور دفاعی انداز رکھتا ہو۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ کرکٹ کمیٹی کا کردار سفارش کی حد تک ہے۔ کوچ یا کپتان کو تبدیل کرنا چیئرمین کا صوابدیدی اختیار ہے۔ پی سی بی ترجمان کے مطابق مصباح الحق کی سالانہ کارکردگی کا تجزیہ کرکٹ کمیٹی ملتان میں قومی ٹی ٹوئنٹی سے قبل کرے گی۔کپتان اظہر علی اور بابر اعظم کی جگہ بھی مصباح الحق کرکٹ کمیٹی کے سامنے پیش ہوں گے لیکن اگر کرکٹ کمیٹی چاہے گی تو کپتانوں کو طلب کرسکتی ہے۔ مصباح الحق کے ہیڈ کوچ اور چیف سلیکٹر بننے کے بعد پاکستانی ٹیم کی کارکردگی مسلسل خراب ہے۔ پاکستان نے 8میں سے دو ٹیسٹ جیتے تین ہارے اور تین ڈرا رہے۔ دونوں ٹیسٹ ہوم گراونڈ پر سری لنکا اور بنگلہ دیش کے خلاف جیتے۔ گیارہ میں سے تین ٹی ٹوئنٹی انٹر نیشنل جیتے چھ ہارے اور دو کا نتیجہ برآمد نہ ہوسکا۔ پاکستان نے ایک سال میں دو ون ڈے انٹرنیشنل سرفراز احمد کی کپتانی میں کھیلے اور دونوں میں کامیابی حاصل کی تھی۔ احسان مانی نے مصباح الحق کی کارکردگی پر عدم اطمینان کا اظہار کیا تھا۔ مصباح الحق نے ٹی ٹوئنٹی ٹیم کے بارے میں کہا کہ جب وہ ہیڈ کوچ بنے اس وقت بھی ٹیم عالمی رینکنگ میں نیچے آرہی تھی۔ احسان مانی کے چیئرمین بننے کے بعد پاکستان کرکٹ ٹیم کی کارکردگی میں مسلسل تنزلی آئی ہے ایک سال کے دوران پی سی بی مسلسل تنازعات میں گھرا ہوا ہے اور گورنس کا شدید فقدان دکھائی دے رہا ہے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ نے ڈومیسٹک سیزن 21-2020 کے شیڈول کا اعلان کردیا ہے۔ شیڈول کی تیاری اس انداز سے کی گئی ہے کہ ڈومیسٹک کرکٹ میں اعلی کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے کرکٹرزکے لیے فرنچائز کرکٹ اور قومی ٹیموں میں جگہ بنانا مزید آسان ہوسکے۔گزشتہ سال کی نسبت حالیہ سیزن میں پی سی بی  نے فرسٹ الیون ٹیموں کے مابین کھیلا جانے والا قومی ٹی ٹونٹی کپ اور پاکستان کپ کے میچوں کو ڈبل لیگ کی بنیاد پر کروانے کا فیصلہ کیا ہے۔اسی طرح قومی انڈر 19 ون ڈے  کرکٹ ٹورنامنٹ بھی ڈبل لیگ کی بنیاد پر کھیلا جائے گا۔اس بنیاد پر ہر ٹورنامنٹ میں تمام چھ ٹیموں کو 10 لیگ  میچوں میں شرکت کا موقع ملیگا، جس کے بعد 4 بہترین ٹیموں کے درمیان سیمی فائنلز ہوں گے۔ ایونٹ کی 2 بہترین ٹیمیں فائنل میں مدمقابل آئیں گی۔جونیئر ٹورنامنٹ میں سیمی فائنلز کی بجائے  ایونٹ کی ٹاپ 2 ٹیمیں فائنل کھیلیں گی۔رواں سال ڈومیسٹک کرکٹ سیزن کا آغاز 30 ستمبر سے شروع ہونے والے قومی ٹی ٹونٹی کپ سے ہوگا۔کوویڈ 19 کے سبب ان غیرمعمولی حالات میں شیڈول ایونٹ کا پہلا مرحلہ ملتان اور دوسرا  راولپنڈی میں کھیلا جائے گا۔ قومی انڈر 19 ایک روزہ ٹورنامنٹ کے میچز 13 اکتوبر سے 2 نومبر تک لاہور، مریدکے اور شیخوپورہ میں کھیلے جائیں گے۔قومی ٹی ٹونٹی کپ اور قومی انڈر19 ایک روزہ کرکٹ ٹورنامنٹ کوستمبر، اکتوبر میں منعقدکروانے کی بڑی وجہ ایچ بی ایل پی ایس ایل 2020 کی نومبر میں شیڈول ڈرافٹنگ کے لیے تمام فرنچائز مالکان کی توجہ ان ابھرتے ہوئے نوجوان اور باصلاحیت کرکٹرز کی طرف مرکوز کرنا ہے۔سیزن  کا اختتام پاکستان کپ ون ڈے ٹورنامنٹ سے ہوگا۔ یہ ایونٹ 8 سے 31 جنوری تک کھیلا جائے گا۔ جس کے بعد فروری، مارچ میں شیڈول ایچ بی ایل پاکستان سپر لیگ 2021 کے مقابلوں کی تیاری کا آغاز ہوجائے گا۔کوویڈ19 سے متعلق ہدایات کے مطابق قائداعظم ٹرافی کے دوران تمام کھلاڑیوں اور آفیشلز کی نقل و حرکت محدود ہوگی، جس کے  سبب ایونٹ کے  تمام میچز کراچی میں کروانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔پاکستان ڈومیسٹک کرکٹ کے ماتھے کا جھومر، قائداعظم ٹرافی، کیرواں سال  تمام میچز کراچی میں کھیلے جائیں گے۔ ایونٹ کے نان فرسٹ کلاس میچز 18 اکتوبر سے 13 دسمبر تک کھیلے جائیں گے جبکہ فرسٹ کلاس میچز 25 اکتوبر سے پانچ جنوری  تک کھیلے جائیں گے۔قائداعظم ٹرافی اور پاکستان کپ کے وینیو کے لیے کراچی کا انتخاب ملک بھر میں متوقع موسمی صورتحال کو پیش نظر رکھ کر کیا گیا ہے۔ ان دنوں  میں ملک کے دیگر شہروں کو عمومی طور پر دھند، اوس اور دیگر حالات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔شیڈول کی تیاری میں پی سی بی نے آئندہ سال 15  اپریل سے شروع ہونے والے ماہ مقدس، رمضان المبارک کی تاریخوں کو بھی پیش نظر رکھا ہے۔انڈر13، انڈر16اور  ویمنز ٹورنامنٹ سمیت ایچ بی ایل پی ایس ایل 2021، زمباوے اور جنوبی افریقہ کی سیریز کے  میچوں کے  شیڈول کا اعلان بعد میں کیا جائے گا۔پاکستان کرکٹ بورڈ کے ڈائریکٹر ہائی پرفارمنس ندیم  خان کا کہنا ہیکہ کوویڈ19 کی اس غیریقینی صورتحال میں ڈومیسٹک سیزن 21-2020 کی تیاری ایک مشکل اور چیلنج سے بھرپور مرحلہ تھا تاہم ہم نے کھلاڑیوں اورکھیل کے معیار کو اعلی مقام پر پہنچانے کی غرض سے اس شیڈول کو تیار کیا۔ ندیم خان کا کہنا ہے کہ اس شیڈول کی تیاری میں ایک واضح حکمت عملی اپنائی گئی اور وہ یہ ہے کہ سینئر اور ایج گروپ ٹورنامنٹ میں وائیٹ بال میچز کی تعداد میں اضافہ کیا گیاہے کیونکہ آئندہ 2سے 3 سالوں میں پاکستان کرکٹ  ٹیم کو  محدود طرز کی کرکٹ کے متعدد مقابلوں میں شرکت کرنی ہے، اس کے علاوہ ان ٹورنامنٹس سے پاکستان کو محدود طرز کی کرکٹ میں اپنی عالمی رینکنگ میں بہتری لانے کا موقع بھی مل جائے گا۔انہوں نے مزید کہا کہ ڈومیسٹک میچوں کی تعداد میں اضافے سے تمام کھلاڑیوں کو اس نئے ڈومیسٹک نظام کے تحت نہ صرف اپنی صلاحیتیں دکھانے کے برابر مواقع ملیں گے بلکہ زیادہ کرکٹ سے ان کی آمدن میں بھی اضافہ ہوگا۔ندیم خان نے کہا کہ گزشتہ چند ہفتوں سے ہائی پرفارمنس اور ڈومیسٹک کرکٹ آپریشنز نے شیڈول اور ٹیموں کی تیاری کے علاوہ کوچز کی تقرری اور کھیل کی مرحلہ وار واپسی سمیت دیگر اہم امور کی تشکیل کے دوران مسلسل کام کیاجو قابل ستائش ہے۔انہوں نے کہا کہ اب جبکہ شیڈول کی تصدیق کی جاچکی ہے تو انہیں امید ہے کہ تمام ایسوسی ایشنز کے ہیڈ کوچز اپنے کھلاڑیوں کی دستیابی کو پیش نظر رکھتے  ہوئے تمام کھلاڑیوں کو روٹیشن پالیسی کے تحت مواقع فراہم کرنے سے متعلق ایک واضح پلان تیارکرلیں گے جس سے پاکستان کرکٹ کو فائدہ ہوگا۔شیڈول کے مطابق ڈومیسٹک سیزن 21-2020قومی ٹی ٹونٹی کپ میں فرسٹ الیون33 میچز30 ستمبر تا 18 اکتوبر تک ملتان اور راولپنڈی،قومی ٹی ٹونٹی کپ سیکنڈ الیون کے 15 میچز یکم تا 8 اکتوبر،قومی انڈر19 ون ڈے ٹورنامنٹ کے31 میچز 13 اکتوبر تا 2 نومبر تک لاہور، مریدکے اور شیخوپور،قومی انڈر 19 تین روزہ ٹورنامنٹ کے 16 میچز 5تا29نومبر تک لاہور، مریدکے اور شیخوپورہ،ایچ بی ایل پی ایس ایل 2020  4 کے میچز، 14، 15 اور 17 نومبر، لاہورقائداعظم ٹرافی فرسٹ الیون کے 31 میچز 25 اکتوبر تا5جنوری کراچی، قائداعظم ٹرافی سیکنڈ الیون کے 30 میچز 18 اکتوبر تا13 دسمبر کراچی، پاکستان کپ فرسٹ الیون کے 33میچز 8تا 31جنوری کراچی جبکہ پاکستان کپ سیکنڈ الیون 33میچز 16 تا 24 جنوری کراچی میں کھیلے جائیں گے۔

مزید :

ایڈیشن 1 -