سانحہ موٹروے،خواتین کے شہر،شہر مظاہرے،مجرموں کو سرعام پھانسی دینے کا مطالبہ

سانحہ موٹروے،خواتین کے شہر،شہر مظاہرے،مجرموں کو سرعام پھانسی دینے کا ...

  

 اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) لاہور میں موٹروے پر خاتون سے بداخلاقی کیخلاف وفاقی دارالحکومت سمیت مختلف شہروں میں احتجاجی مظاہرے کئے گئے۔ لاہور کے علاقے گجر پورہ میں موٹروے پر دو ملزمان کی طرف سے خاتون کے ساتھ بداخلاقی پر پشاور، ملتان، اسلام آباد اور راولپنڈی میں احتجاجی مظاہرے ہوئے جن میں خواتین کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔مظاہرین نے پلے کارڈز اْٹھائے رکھے تھے، جن پر انصاف دو کے نعرے درج تھے۔احتجاجی مظاہروں میں پیپلزپارٹی کے سیکریٹری جنرل نیر بخاری، سینیٹر روبینہ خالد نے خصوصی طور پر شرکت کی۔اسلام آباد میں سول سوسائٹی کا مظاہرہ ہوا، مظاہرے میں سول سوسائٹی، عوامی ورکرز پارٹی اور وویمن ڈیموکریٹک فرنٹ کے کارکنوں نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ مظاہرین نے خاتون کے ساتھ زیادتی کے ملزمان کو جلد گرفتار کرنے کا مطالبہ کیا۔پیپلز پارٹی کے سینئر رہنما نیئر بخاری نے کہا کہ ملزمان کو گرفتار کرکے قانون کے مطابق سزا دی جائے۔ حکومت کیلئے یہ واقعہ ایک کھلا چیلنج ہے۔دوسری طرف ملتان میں بھی موٹروے پر زیادتی کے واقعہ کے خلاف خواتین اور بچے سڑکوں پر نکل آئے۔ جماعت اسلامی وومن ونگ نے احتجاجی مظاہرہ کیا اور ریلی نکالی۔ ریلی کے شرکا نے ملزمان کو سرے عام پھانسی دینے کا مطالبہ کیا۔ مظاہرین نے کہاکہ زیادتی کے واقعات کی روک تھام کے لئے ٹھوس اقدامات کئے جائیں، سی سی پی او کے غیر ذمہ دارانہ بیان کی مذمت کرتے ہیں۔راولپنڈی میں بھی جماعت اسلامی حلقہ خواتین زیر اہتمام راولپنڈی پریس کلب کے باہر احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔جہاں حکومت پاکستان سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ مجرموں کو فوری گرفتار کرکے سر عام پھانسی دی جائے۔اس موقع پر مقررین نے کہا کہ صنف نازک کے ساتھ درندگی کا یہ افسوسناک مظاہرہ انسانیت کے نام پر سیاہ دھبہ ہے۔محفوظ اور پاکیزہ معاشرے کا قیام حکمرانوں کی اولین ذمہ داری اور ہماری ضرورت ہے۔امن و امان اور سلامتی و تحفظ کے ذمہ دار ادارے کہاں ہیں؟۔ملک میں جنگل کا قانون اور بھیڑیوں کا راج ہے۔ بچوں اور بچیوں کا زیادتی کے بعد قتل کرنے والے کسی رعایت کے مستحق نہیں۔

مظاہرے 

مزید :

صفحہ اول -