نوشہرہ، محکمہ خوراک کی خوردنی اشیاء فروخت کرنیوالوں کیخلاف کارروائی، بھاری جرمانے 

نوشہرہ، محکمہ خوراک کی خوردنی اشیاء فروخت کرنیوالوں کیخلاف کارروائی، بھاری ...

  

نوشہرہ(بیورورپورٹ)ڈپٹی کمشنر نوشہرہ میر رضا اوزگن کی خصوصی ہدایت """پاکستان سیٹیزن پورٹل"""  پر موصول ہونے والے کمپلینٹ پر عملدرآمد کرتے یوئے محکمہ خوراک نوشہرہ کا ناجائز گرانفروشوں اور ناقص اشیا فروخت کرنے والے دکانداروں کے خلاف کریک ڈان۔چکن فروشوں اور سستا آٹا پروگرام کی چیکنگ کیلئیدو فلور ملوں پر چھاپے، نان بائیوں کو کم وزن روٹی اور ناقص صفائی ستھرائی اور آٹا کے ڈیلرز کو مہنگا آٹا فروخت کرنے پر  بھاری جرمانے۔تفصیلات کے مطابق   محکمہ خوراک نوشہرہ کے اسسٹنٹ فوڈ کنٹرولر محمد اکبر اور فوڈ انسپکٹرز وحیداللہ یاسین اور آصف علی شاہ نے گرانفروشوں کے خلاف حکیم آباد بازار میں کارروائی کی، جس میں چکن کی ریٹ سرکاری ریٹ سے زیادہ ریٹ چارج کرنے (151 کے بجائے 166) پر اور  مضر صحت گوشت فروخت کرنے پراور 2 نانبائیوں  کو کم وزن روٹی فروخت کرنے پر ان کے خلاف نوشہرہ کینٹ تھانہ میں مراسلہ جمع کیا جبکہ مہنگا آٹا فروخت کرنے والے آٹا ڈیلروں پر بھی بھاری جرمانے عائد کئے گئے، کاروائی مکمل کرنے کے بعد دو فلور ملوں (خلیل فلور مل اور قاسم فلور مل) پر اچانک چھاپے لگائے اور سستا آٹا پروگرام کے تحت عوام کو ملنے والے آٹے کے بارے مکمل چھان بین کی، اس موقع پراسسٹنٹ فوڈ کنٹرولر محمد اکبر نے کہا کہ مہنگا آٹا فروخت کرنے والوں کو ساتھ کسی بھی قسم کی رعایت نہیں برتی جائے گی، ناقص اشیا فروخت کرنے والوں اور مصنوعی مہنگائی بنانے والے تاجروں پر مقدمات بناکر انہیں جیل بھیجا جائے گا،اسسٹنٹ فوڈ کنٹرولر نیمزید کہا کہ مناسب منافع تاجروں کا حق ہے  لیکن ناجائز منافع خوری کرنے والے معاشرے کیلئے ایک قسم کا ناسور ہے جن کے خلاف کاروائی کرنا کسی جہاد سے کم نہیں۔نوٹ:- مغزز صارفین شکایت کی صورت میں درجہ ذیل نمبر پر رابطہ کریں۔0923 - 9220095

مزید :

پشاورصفحہ آخر -