دہشتگردی سے صحافت اور سیاست دونوں متاثر ہوئے:شوکت علی یوسفزئی

دہشتگردی سے صحافت اور سیاست دونوں متاثر ہوئے:شوکت علی یوسفزئی

  

 پشاور(سٹاف رپورٹر)صوبائی وزیر محنت و ثقافت شوکت یوسفزئی نے کہا ہے کہ دہشت گردی نے صحافت اور سیاست دونوں کو متاثر کیاہے، میڈیا حکومت پر تنقید ضرور کرے مگر پارٹی نہ بنے،آزادی اظہار کی آڑ میں قومی سلامتی کے اداروں کو ٹارگٹ کرنا مناسب نہیں، بلدیاتی انتخابات کرانا چاہتے ہیں تاہم قوانین میں ترامیم اور نئی حلقہ بندیوں کی وجہ سے تاخیر ہوئی ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے مقامی ہوٹل میں خواتین صحافیوں کے لیے منعقدہ مقامی حکومتوں کے نظام سے متعلق پانچ روزہ ورکشاپ کی اختتامی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔شوکت یوسفزئی نے کہا کہ کرپشن نے ہماری قومی اقدار کو تباہ کرکے رکھ دیا ہے،دہشت گردی ختم کرنے کے لیے ہماری پاک فوج اور سیکورٹی اداروں نے بہت بڑی قربانیاں دی ہیں،آزادی اظہار کی آڑ میں ہمیں اپنے قومی سلامتی کے اداروں کو ٹارگٹ نہیں کرنا چاہیے۔شوکت یوسفزئی نے کہا کہ صحافیوں کو خطے کے حالات کا علم ہونا چاہیے، خیبر پختونخوا میں خواتین کا بڑی تعداد میں صحافت میں آنا خوش آئند ہے۔شو کت یوسفزئی نے کہا کہ آئین پاکستان صحافتی آزادی اور صحافیوں کے حقوق کی ضمانت دیتا ہے۔انہوں نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان اختیارات کی نچلی سطح پر منتقلی کے بہت بڑے حامی ہیں، بلدیاتی سیٹ اپ کے بعد ایم این ایز، ایم پی ایز کے ترقیاتی فنڈز بتدریج ختم ہو جائیں گے۔بلدیاتی ادارے بنیادی طور پر سیاست کی نرسریاں ہیں،قانونی ترامیم اور حلقہ بندیاں بلدیاتی انتخابات میں تاخیر کا باعث بنیں ہیں۔خیبرپختونخوا میں اختیارات کی نچلی سطح تک منتقلی کا عمل پچھلی حکومت میں شروع ہوا اور اس بار اس میں مزید بہتری لا رہے ہیں۔دریں اثناء صوبائی وزیر شوکت یوسفزئی نے بلاول زرداری کے بیان پر ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ کرپشن نے پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ کی سیاست ختم کر دی ہے،عمران خان پاکستان کے وزیراعظم ہیں انہوں نے کراچی کو گیارہ سو ارب کا پیکج دیا۔ شوکت علی یوسفزئی نے کہا کہ شاید اس پیکیج کی وجہ سے کچھ لوگوں کے پیٹ میں مروڑ اٹھ رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ انشاء اللہ جلد ہی سندھ کی محرومیاں ختم کرینگے۔

مزید :

صفحہ اول -