خیر اوروں نے بھی چاہا تو ہے تجھ سا ہونا | احمد مشتاق|

خیر اوروں نے بھی چاہا تو ہے تجھ سا ہونا | احمد مشتاق|
خیر اوروں نے بھی چاہا تو ہے تجھ سا ہونا | احمد مشتاق|

  

خیر  اوروں نے بھی چاہا تو ہے تجھ سا ہونا

یہ الگ بات کہ ممکن نہیں ایسا ہونا

دیکھتا اور نہ ٹھہرتا تو کوئی بات بھی تھی

جس نے دیکھا ہی نہیں اس سے خفا کیا ہونا

تجھ سے دوری میں بھی خوش رہتا ہوں پہلے کی طرح

بس کسی وقت برا لگتا ہے تنہا ہونا

یوں میری یاد میں محفوظ ہیں تیرے خد و خال

جس طرح دل میں کسی شے کی تمنا ہونا

زندگی معرکۂ روح و بدن ہے مشتاقؔ

عشق کے ساتھ ضروری ہے ہوس کا ہونا

شاعر: احمدمشتاق

(شعری مجموعہ:گردِ مہتاب،سالِ اشاعت1981)  

Khair    Aoron   Nay    Bhi    Chaaha   To   Hay   Tujh   Sa   Hona

Yeh    Alag    Baat   Keh   Mumkin   Nahen    Aisa     Hona

Dekhta    Aor    Na    Thahirta   To   Koi    Baat    Bhi    Thi

Jiss    Nay   Dekha   Hi    Nahen   Uss    Say   Khafa   Kaya   Hona

Tujh   Say   Doori   Men   Bhi   Khush   Rehta   Hun   Pehlay   Ki   Tarah

Bass   Kisi   Waqt   Bura   Lagta   Hay   Tanha   Hona

Yun   Miri   Yaad    Men   Mehfooz   Hen   Tiray   Khad -o-Khaal

Jiss    Traah   Dil   Men   Kisi    Shay   Ki   Tamanna   Hona

Zindagi    Maarka -e- Rooh -o-Badan    Hay    MUSHTAQ

Eshq    K    Saath    Zaroori   Hay    Hawas    Ka    Hona

Poet: Ahmad Mushtaq

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -سنجیدہ شاعری -