وقار الحسن کے خلاف پنجاب حکومت کے تمام دعوے جھوٹے نکلے، کوئی کریمنل ریکارڈ بھی نہ ملا، معمولی جھگڑے پر مقدمہ درج ہوا

وقار الحسن کے خلاف پنجاب حکومت کے تمام دعوے جھوٹے نکلے، کوئی کریمنل ریکارڈ ...
وقار الحسن کے خلاف پنجاب حکومت کے تمام دعوے جھوٹے نکلے، کوئی کریمنل ریکارڈ بھی نہ ملا، معمولی جھگڑے پر مقدمہ درج ہوا

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) موٹروے زیادتی کیس میں پنجاب حکومت نے وقار الحسن نامی شخص کو ملزم نامزد کیا اور نہ صرف اس کی تصویر پورے ملک میں پھیلائی بلکہ اس کا کریمنل ریکارڈ ہونے کا بھی دعویٰ کیا گیا لیکن اب یہ انکشاف ہوا ہے کہ وقارالحسن کا سرے سے کوئی کریمنل ریکارڈ ہی نہیں ہے۔

شیخوپورہ کی ضلعی پولیس کے ترجمان کی جانب سے واضح کیا گیا ہے کہ موٹروے زیادتی کیس میں نامزد ملزم وقارالحسن کی کوئی کریمنل ہسٹری نہیں ہے اور نہ ہی اس کا کوئی ریکارڈ ہے۔

ترجمان کے مطابق 2015 میں وقارالحسن کے والد اور بھائی کے خلاف لڑائی اور چوری کا مقدمہ درج ہوا تھا۔ تھانہ فیکٹری ایریا شیخو پورہ میں درج ہونے والا یہ مقدمہ محلے داروں کی جانب سے صلح کرائے جانے کے بعد خارج ہوگیا تھا۔

خیال رہے کہ موٹروے زیادتی کیس میں پنجاب حکومت اور پولیس کی جانب سے نامزد کیے جانے والے ملزم وقارالحسن نے اتوار کے روز خود کو سی آئی اے پولیس ماڈل ٹاؤن کے حوالے کردیا تھا۔

مزید :

Breaking News -اہم خبریں -علاقائی -پنجاب -لاہور -