پیداواری لاگت بڑھنے سے سرمایہ کار مشکلات کا شکار: پیاف

پیداواری لاگت بڑھنے سے سرمایہ کار مشکلات کا شکار: پیاف

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 
 لاہور(سٹی رپورٹر)پاکستان انڈسٹریل اینڈ ٹریڈرز ایسوسی ایشنز فرنٹ (پیاف) کے چیئرمین پیاف میاں نعمان کبیر،سینئر وائس چیئر مین ناصر حمید خان، وائس چیئر مین پیاف جاوید اقبال صدیقی اور دیگر اہم عہدیداروں حاجی محمد حنیف، طاہر منظور چوہدری، محمد علی میاں،، نعیم حنیف،مسعود نظامی، ذیشان سہیل ملک، حسن رضا، محمد ابوبکر نے کہا ہے کہ ملک میں پیداواری لاگت کے بڑھنے کی وجہ سے انڈسٹریز اور ٹریڈرز کو نقصان پہنچ رہا ہے۔ اس کی بڑی وجہ انرجی کی بڑھتی ہوئی لاگت ہے جو کہ ہمارے ہمسایہ ممالک کے مقابلے میں کہیں زیادہ ہے۔ پیداواری لاگت کے بڑھنے سے سرمایہ کاری کی حو صلہ شکنی ہو رہی ہے۔ برآمدات میں مسلسل اضافے کے لئے بجلی اور آر ایل این جی کے رعایتی نرخوں میں توسیع کے لئے 68 ارب روپے کی حالیہ منظوری اہم ہے لیکن یہ فائدہ مقامی صنعتوں کو بھی فراہم کیا جائے تاکہ صنعتی ترقی میں مدد مل سکے جس کے لئے کم لاگت کی معلومات اور خام مال صنعتی توسیع کی بنیادی ضرورت ہے۔ جی ایس پی پلس سٹیٹس کے باوجود پاکستان کی برآمدات میں خاطر خواہ اضافہ نہیں ہوا ہے جسکی بڑی وجہ پیداواری لاگت میں آئے روز کا اضافہ، بجلی اور گیس مہنگی ہونا اور بے جا قسم کے ٹیکس لگنا ہیں۔چیئر مین پیاف اور نامزد صدر لاہور چیمبر میاں نعمان کبیرنے سیئنر وائس چیئرمین ناصر حمید خان اور وائس چیئر مین جاوید اقبال صدیقی نے کہا کہ اشیاء و خدمات کی پیداواری لاگت کو کنٹرول کیا جائے تاکہ مہنگائی کو کم کیا جائے، انڈسٹری کے لئے متوقع پیکج میں صنعتوں کو بجلی و گیس کے ٹیرف پر ریلیف دیا جائے۔ انھوں نے کہا کہ ہماری کاروباری لاگت زیادہ ہونے کی وجہ سے خطے کے دیگر ممالک نے انٹرنیشنل مارکیٹ پر قبضہ کر رکھاہے، جس کی واپسی کے لئے انڈسٹری کو ریلیف دینے کی ضرورت ہے تاکہ اپنا شیئر واپس لیا جائے۔انڈسٹری کی ریفنڈ ادائیگیاں جلد از جلد کی جائیں اور پیکجنگ میٹیریل کو بھی زیرور یٹیڈ کیٹگری میں شامل کرتے ہوئے ریفنڈ دیا جائے۔وائس چیئرمین ناصر حمید اور جاوید اقبال صدیقی نے کہا کہ مہنگی بجلی و گیس سے صنعتکاروں کے ساتھ ساتھ عوام بھی پریشانی کا شکار ہیں۔ پیداواری لاگت بڑھنے سے صنعتوں کی شرح نمو کم ہو کر رہ گئی ہے جس سے صنعتکاروتاجر برادری پریشانی کا شکار ہیں کیونکہ بڑھتے ہوئے بے جا ٹیکس اور گیس و بجلی کی قیمتوں میں خطے کے دیگر ممالک کی نسبت اضافہ سے اشیاء کی پیداواری لاگت دن بدن بڑھ رہی ہیں جس سے بالواسطہ طور پر عوام متاثر ہورہی ہے۔ پیداوار کم ہونے سے برآمدات بھی متاثر ہو رہی ہیں اور برآمدات میں کمی سے تجارتی خسارہ بڑھتا جا رہا ہے۔ برآمدات بڑھانے کے لئے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات کیے جائیں۔

مزید :

کامرس -