ہیپیٹائٹس سی کے ایک طریقہ علاج سے 90 فیصد مریضوں کو 12 ہفتوں میں صحت یاب کیا جا سکتا ہے

ہیپیٹائٹس سی کے ایک طریقہ علاج سے 90 فیصد مریضوں کو 12 ہفتوں میں صحت یاب کیا جا ...

  

لندن (این این آئی)نئی تحقیق میں کہا گیا ہے کہ ہیپیٹائٹس سی کے ایک طریقہ علاج سے 90 فیصد مریضوں کو بارہ ہفتوں میں صحت یاب کیا جا سکتا ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ تحقیق ہیپیٹائٹس کے علاج میں ایک بڑی پیش رفت ہے ¾صرف برطانیہ میں ہی دو لاکھ افراد اس مرض میں مبتلا ہیں جس کی وجہ سے ہونے والی اموات 1996 کے مقابلے میں تین گنا بڑھ گئی ہیں موجودہ علاج جو صرف کچھ صورتحال میں فائدہ مند ہے اسے برطانیہ کے صرف تین فیصد مریض ترجیح دیتے ہیں۔ ہیپیٹائٹس سی ایسا مرض ہے جس سے انسانی جگر متاثر ہوتا ہے ¾ یہ مریض کے خون یا جسمانی رتوبتوں سے پھیلتی ہے اور ٹیٹو سویاں یا نشہ کےلئے مشترکہ استعمال ہونے والی سویوں سے بھی پھیل سکتی ہے۔یونیورسٹی آف ٹیکسس کے صحت اور سائنس سینٹر میں موجود محقیقین نے کھانے والی نئی دوا کا ٹیسٹ2013 میں سپین، جرمنی اور انگلینڈ اور امریکہ کے 78 سینٹرز میں 380 مریضوں پر کیا۔ اس سلسلے میں دو تحقیقات کی گئی تھیں ایک جس میں مریض بارہ ہفتے سے مرض میں مبتلا تھا اور دوسری جس میں مریض چوبیس ہفتوں سے مرض میں مبتلا تھے۔ یہ مریض لیور سیروسز میں مبتلا تھے جس سے ان میں مرض بہت بڑھ چکا تھا۔بارہ ہفتوں کے تجربے کے بعد 208 میں سے 191 مریضوں میں ہیپیٹائٹس سی کا مرض موجود نہیں تھا ۔ کچھ دیر بعد 172 میں سے 165 مریضوں میں مرض ختم ہوا اور دو ہفتے بعد 96 فیصد مریض صحت یاب ہو چکے تھے۔تحقیق میں شامل ڈاکٹر فریڈ پورڈیڈ نے کہاکہ یہ زبردست بات ہے ¾میں مریضوں کےلئے بہت خوش ہوں۔ یہ اپنے مستقبل کے بارے میں اب پر امید ہیں۔انہوںنے کہاکہ یہ نئی دوا ہیپیٹائٹس سی بنانے والی پروٹین پر حملہ کرتی ہے اور اسے بڑھنے سے روکتی ہے یہاں تک کہ مرض بالکل ختم ہو جائے اس دوا کے استعمال سے کچھ منفی اثرات یا سائڈ ایفیکٹ ہوئے جن میں مریضوں کو تھکن کا احساس ¾ سر درداور متلی کی شکایت رہی۔ہیپیٹائٹس سی کے موجودہ علاج میں ایک سال کےلئے ٹیکے لگائے جاتے ہیں جن کے سائڈ ایفیکٹ کی وجہ سے مریضوں میں ڈیپریشن، تھکن اور متلی کی شکایت عام ہے۔ ڈاکٹر پورڈیڈ کا مزید یہ کہنا تھا کہ یہ دوا لیور سیروسز کے مریضوں کے لیے فائدہ مند نہیں ۔گکیکاس ماجیورکنس یونیورسٹی آف آکسفرڈ میں ماہر امراض ہیں اور ان کا کہنا ہے کہ یہ نئی دوا ہیپٹائٹس کے علاج میں ’ ایک بڑی پیش رفت ہے۔ہیپیٹائٹس سی ٹرسٹ کے چیف ایگزیکٹیو چارلس گور نے کہا کہ یہ ایک نئے دور کا آغاز ہے۔ میرے خیال میں یہ بہت زبردست پیش رفت ہے۔ اب ہمارے پاس ایک موقع ہے کہ ہم بغیر کسی ویکسین کے ہیپٹائٹس سی کو برطانیہ میں سے ہمیشہ کےلئے ختم کر دیں۔

مزید :

عالمی منظر -