ڈالر کم ترین سطح پر آنے کے باوجود مہنگائی بلند ترین سطح پرکیوں ہے، بلال مصطفی

ڈالر کم ترین سطح پر آنے کے باوجود مہنگائی بلند ترین سطح پرکیوں ہے، بلال مصطفی

  

  ڈالر کم ترین سطح پر آنے کے باوجود مہنگائی بلند ترین سطح پرکیوں ہے، بلال مصطفی

لاہور(جنرل رپورٹر) پاکستان مسلم لیگ ق کے رہنما و مسلم لیگ یوتھ ونگ کے مرکزی صدر سید بلال مصطفی شیرازی نے کہا ہے کہ ڈالر ملک میں کم ترین سطح پر آنے کے باوجود مہنگائی بلند ترین سطح پرکیوں ہے ؟اس کا جواب دیں،انہوںنے کہا کہ حکمران سپریم کورٹ کے ان ریمارکس پر سنجیدگی سے توجہ دیں کہ اگر"حکومت آٹا نہیں دے سکتی تو چوہے مار گولیاں دےدے"انہوں نے کہا کہ اگر غریب عوام سے جینے کا حق چھینا گیا تو پھر ایسا انقلاب آئے گا کہ حکومت رہے گی اور نہ کسی کی میٹروبس۔سید بلال شیرازی نے کہا کہ پنجاب حکومت نے ستمبر سے مارچ کے وسط تک اڑھائی لاکھ من گندم مخصوص فلور ملز مالکان کے ذریعے مہنگے داموں صوبہ سے باہر بیچی اور اربوں روپے کا منافع کمایا، ساری گندم سمگل کروادینے کا نتیجہ ہے کہ آج پنجاب میں گندم اور آٹے کا بحران ہے ، یہ سب ناقص منصوبہ بندی کا نتیجہ ہے،حکومتی اقدامات سے گڈ گورننس بیڈ گورننس میں تبدیل ہورہی ہے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 4 -