مشرف کا ساتھ دینے والوں کا بھی ٹرائل ہونا چاہیئے ،شجاعت

مشرف کا ساتھ دینے والوں کا بھی ٹرائل ہونا چاہیئے ،شجاعت

  

لاہور(آئی این پی) مسلم لیگ (ق) کے صدر چوہدری شجاعت حسین نے کہا ہے کہ میں وفاقی وزیر دفاع خواجہ آصف سے استعفیٰ کا مطالبہ نہیں کر تا لیکن وہ فوج پر تنقید کی وجہ سے آرٹیکل62اور63پر پورے نہیں اترتے ‘صرف پر ویز مشرف ہی انکا ساتھ دینے والوں کا بھی ٹرائل ہو نا چاہیے‘حکو مت کے اپنے لوگ ہی حکو مت کے خلاف سازشیں کر رہے ہیں ‘ اگر پر ویز مشرف ملک سے باہر جائیں گے تو وہ ضرور وطن واپس آئیں گے‘آئین اورقانون کی بالادستی کی بات کر نیوالے نوازشر یف فوج پر تنقید کر نیوالے وزراء کیخلاف کاروائی کیوں نہیں کرتے ؟ تحفظ پاکستان کا بل حکو مت کی تباہی کا آغاز کر سکتا ہے ۔ا توار کے روز اپنے ایک انٹر ویو کے دوران مسلم لیگ (ق) کے صدر چوہدری شجاعت حسین نے کہا ہے کہ اگر حکو مت آئین توڑنے پر آرٹیکل6کے تحت کاروائی میں سنجیدہ ہے تو پھر صرف مشرف نہیں بلکہ اس وقت انکا ساتھ دینے والے تمام افراد کا بھی ٹرائل ہو نا چاہیے اور صرف مشرف کیخلاف کاروائی انتقامی کا روائی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پر ویز مشرف ملک سے بھاگنے والے نہیں وہ عدالتوں کا سامنا کر رہے ہیں اور اگر پر ویز مشرف ملک سے باہر جائیں گے تو وہ ضرور وطن واپس آئیں گے ۔

مزید :

صفحہ اول -