طویل عرصہ گزرنے کے باوجود پولیس کمسن بچہ بازیاب نہ کروا سکی

طویل عرصہ گزرنے کے باوجود پولیس کمسن بچہ بازیاب نہ کروا سکی

  

حافظ آبادڈسٹرکٹ رپورٹر)حافظ آباد کے نواحی گاﺅں نواں شہر سے قریباً3سال قبل اغواءکئے جانے والے 13سالہ بچہ اظہر بشیر کو پولیس طویل عرصہ گزرنے کے باوجود بازیاب نہ کروا سکی۔مغوی بچے کے والدین نے پولیس کی بے حسی کے خلاف سپریم کورٹ آ ف پاکستان کے سامنے احتجاجی دھرنا دینے کا اعلان کر دیا۔تفصیلات کے مطابق قریباً 3سال قبل اغواءمحنت کش بشیر احمد کے 13سالہ بیٹے اظہر بشیر کو گھر سے اغواءکر لیا گیا۔جس پر پولیس جلالپور بھٹیا ں نے2ملزمان کے خلاف اغواءکا مقدمہ درج کیا۔لیکن پولیس 3سال کا عرصہ گزرنے کے باوجود بچے کو تاحال بازیات نہ کروا سکی ہے۔بچے کے والد بشیر احمد اور والدہ نے بتایا کہ 17 جولائی2013 کو رینج کرائمزگوجرانوالہ نے ڈی پی او حافظ آباد زبیر دریشک کو اظہر بشیر کی بازیابی کیلئے خصوصی ٹیم تشکیل دینے کی ہدائت کی۔لیکن اس ضمن میں پولیس اور ایس ایچ او جلالپوربھٹیاں نے کوئی دلچسپی نہ لی ہے اور اب سپریم کورٹ کی جانب سے بچے کی عدم بازیابی کا نوٹس لئے جانے کے بعد پولیس رسمی کا روائی کر رہی ہے۔والدین نے کہا ہے کہ انہیں بتایا جائے کہ ان کے بیٹے کو آسمان اٹھا کر لے گیا ہے یا زمین نگل چکی ہے۔اگر اب بھی ان کے بچے کو بازیاب نہ کروایا گیا تو سپریم کورٹ کے سامنے احتجاجی دھرنا دیتے ہوئے بھوک ہڑتال کریں گے۔دوسری جانب ایس ایچ او ظفر سجاد گوندل نے بتایاکہ مذکورہ مقدمہ میں ایک ملزم کا چالان کر کے اسے جیل بھیج دیا گیا تھا۔بچے کی بازیابی کیلئے ہم کوشش کر رہے ہیں۔

مزید :

علاقائی -