تحریک انصاف طالبانا ئزیشن اور بندوق کے ذریعے شریعت کے نفاذ کےخلاف ہے، شاہ محمود

تحریک انصاف طالبانا ئزیشن اور بندوق کے ذریعے شریعت کے نفاذ کےخلاف ہے، شاہ ...

  

اسلام آباد (آئی این پی)پاکستان تحریک انصاف کے وائس چیئرمین مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ تحریک انصاف نے تحفظ پاکستان آرڈیننس بل کو سپریم کورٹ میں چیلنج کرنے کی حکمت عملی مرتب کر لی ہے، پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس میں بل کی منظوری ہوئی تو تحریک انصاف یوری طور پر اسے سپریم کورٹ میں چیلنج کرے گی، تحریک انصاف ملک میں طالبائزیشن اور بندوق کے ذریعے شریعت کا نفاذ کے خلاف ہے، ملک میں امن و امان کے قیام کے لئے اگر پی ٹی آئی کی مقبولیت میں کمی واقع ہوئی ہے تو غم نہیں، اپوزیشن اور چند حکومتی عناصر ملکی سلامتی کے معاملہ پر سیاست کر رہے ہیں، حکومت کی سستی اور اندرونی اختلافات کی وجہ سے مذاکرات کے ذریعے امن و امان کی بحالی کا موقع ضائع ہوتا دکھائی دے رہا ہے۔ وہ اتوار کو آئی این پی سے گفتگو کر رہے تھے۔ مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا کہ تحریک انصاف تحفظ پاکستان آرڈیننس بل کو کالا قانون سمجھتی ہے اور اس کے خلاف ہر محاذتک جانے کو تیار ہے۔ انہوں نے کہا کہ ماہرین قانون کی رائے پر عمل کرتے ہوئے اس بل کو سپریم کورٹ میں چیلنج کرنے کی حکمت عملی مرتب کر لی ہے، اگر حکومت نے اس بل کو سینٹ یا پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے منظور کرالیا تو تحریک انصاف فوری طور پر اس بل کو سپریم کورٹ میں چیلنج کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ سینٹ سے منظوری کے بعد ہی یہ بل قانون کی شکل اختیار کرے گا۔ سینٹ میں موجود اپوزیشن کی جماعتوں کے حالیہ رویے سے ظاہر ہوتا ہے کہ وہ اس بل کو منظور نہیں ہونے دیں گے تاہم حکومت اس بل کو قانون بنانے کے لئے پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس کا سہارا لے سکتی ہے اور واضع اکثریت کی وجہ سے اس بل کو منظور بھی کرایا جا سکتا ہے۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کے موقف کو سننے اور سمجھے بغیر بعض عناصر نے ہمیں طالبان کا ترجمان قرار دے دیا، جس کی وجہ سے مسائل پیدا ہوئے۔ انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی ملک میں طالبائزیشن نہیں چاہتی اور بندوق کے ذریعے شریکت کے نفاذ کے خلاف ہے۔ ہم ملک میں امن و امان کے قیام کے لئے مذاکرات کا مطالبہ کر رہے ہیں کیونکہ مذاکرات ایک آپشن ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف ملک کی بقاءو سلامتی کے لئے مذاکرات کے معاملہ پر کوئی سیاست نہیں کر رہی تاہم بعض اپوزیشن کی جماعتیں اور حکومتی عناصر اس معاملہ پر سیاست کر رہے ہیں

مزید :

علاقائی -