مری کی حدود میں جنگل سے دو کم سن بچوں کی لاشیں برآمد،ایک زخمی

مری کی حدود میں جنگل سے دو کم سن بچوں کی لاشیں برآمد،ایک زخمی

ماموں ایبٹ آباد سے لے کرآئے : زخمی بچے کا ابتدائی بیان ، جائے واردات سے جیپ اورآلہ قتل برآمد

مری کی حدود میں جنگل سے دو کم سن بچوں کی لاشیں برآمد،ایک زخمی
کیپشن: Bara Kahu

  

راولپنڈی (مانیٹرنگ ڈیسک) مبنہ طوپر ماں نے دوسگے بھانجوں کو قتل کردیاجبکہ تیسرے کو زخمی حالت میں لاشوں کے ہمراہ بارہ کہو کے جنگل میں پھینک کر فرار ہوگیا تاہم خوش قسمتی سے کسی جنگلی جانور نے اُسے نقصان نہیں پہنچایا۔پولیس کے مطابق قتل دشمنی کا نتیجہ ہوسکتاہے تاہم نجی ٹی وی چینل نے دعویٰ کیاہے کہ ملزم نے عامل کے کہنے پر بہن کی گود اُجاڑدی ۔ تفصیلات کے مطابق پولیس نے بتایاکہ تھانہ مری کی تریٹ چوکی کی حدود سے بروہاکے جنگل سے دو کم سن بچوں کی لاشیں ملی ہیں جنہیں بے دردری سے قتل کیاگیاتھا۔ بچوں کی عمریں پانچ سے آٹھ سال اور شناخت عمرعلی ، قادرعلی کے نام سے ہوئی جبکہ ایک بچہ زین علی لاشوں کے پاس سے زخمی حالت میں ملاہے جسے ہسپتال منتقل کردیاگیاہے ۔ڈاکٹروں کے مطابق زین علی ہوش میں ہے لیکن بات چیت نہیں کررہا، پھیپھڑوں میں خون بھر گیاہے ، آپریشن کے بعد امکان ہے کہ بچہ ٹھیک ہوجائے گا۔ ایس پی آپریشن میاں مقبول نے بتایاکہ زخمی بچہ پولیس کی حفاظتی تحویل میں ہے اور اُس نے ابتدائی طورپر بتایاکہ والد کانام ضیاءالرحمان ہے اور وہ اپنے ماموں ندیم کے ساتھ ایبٹ آباد سے آئے تھے ۔ پولیس کے مطابق تینوں بچے چار روزقبل ایبٹ آباد کے نواحی گاﺅں جبراں سے لاپتہ ہوئے تھے جس پر ایبٹ آباد کے تھانہ رٹاہ پولیس سے رابطہ کرلیا۔ پولیس کے مطابق جائے واردات سے جیپ اور خنجربرآمد کرلیاگیاہے اور شبہ ہے کہ ملزم تیسرے بچے کو بھی مارنا چاہتاتھالیکن کسی کی ممکنہ آمد یا گھبراہٹ میں جیپ بھی وہیں چھوڑ کر فرارہوگیا۔ پولیس نے شبہ ظاہر کیاہے کہ ملزم نے دشمنی کی بناءپر اپنی بہن کی گوداُجاڑ دی تاہم نجی ٹی وی چینل نے دعویٰ کیاکہ ملزم نے جعلی پیر کے کہنے پر بچوں کو ذبح کردیا۔

مزید :

اسلام آباد -اہم خبریں -