مردہ انسانوں کا گوشت کھانیوالے سزا یافتہ بھائیوں نے دوبارہ انسانی گوشت کھانا شروع کردیا،بچے کا سربرآمد

مردہ انسانوں کا گوشت کھانیوالے سزا یافتہ بھائیوں نے دوبارہ انسانی گوشت ...
Bhakkar
کیپشن: Man started again to Eat Human Meat

  

بھکر(خصوصی رپورٹ) تحصیل دریاخان میں مردہ انسانوں کاگوشت کھانے کے الزام میں سزا یافتہ بھائیوں نے دوبارہ انسانی گوشت کھاناشروع کردیاہے اور پولیس نے ایک ملزم کو حراست میں لے کر گھر سے بچے کے جسمانی اعضاءبرآمد کرلیے ہیں ، تین سال قبل بھی دونوں بھائی اُس وقت پکڑے گئے تھے جب وہ انسانی اعضاءپکانے والے تھے ۔ تفصیلات کے مطابق تحصیل دریاخان کے علاقے کہاوڑکلاں کے انسانی گوشت کھانے میں جرم میں سزا یافتہ بھائیوں نے دوبارہ انسانی گوشت کھانا شروع کردیاہے اور اس کا انکشاف اُس وقت ہوا جب پولیس کو شک ہونے پر گھر پر چھاپہ مارا گیا۔ چھاپہ مار کارروائی کے دوران پولیس نے ایک بچے کا سربرآمد کرلیاہے جبکہ ایک ملزم عار ف عرف اتھل کو حراست میں لے لیاجس نے ابتدائی تفتیش میں اعتراف جرم کرلیاگیاہے جبکہ دوسرا بھائی فرمان فرار ہونے میں کامیاب ہوگیا۔ یادرہے کہ اس سے قبل بھی قبرکی کھدائی ہونے پر دونوں بھائیوں پر شک ہوا تھا اورتین سال قبل 2011ءمیں اس وقت پکڑے گئے تھے جب وہ انسانی اعضاءپکارہے تھے ، پولیس نے ہانڈی وغیرہ بھی قبضے میں لے لی تھی ۔ عدالت نے 18مئی 2012کو ایک سال قیدکی سزاسنائی جو ملزم پوری کرکے رہاہوگئے ۔ پولیس کاکہناتھاکہ چاردفعات لگائی گئی تھیں لیکن مخصوص قانون نہ ہونے کی وجہ سے ملزموں کو معمولی سزا ملی ۔ 2011ءمیں ملزموں کا موقف تھاکہ اُن کے باپ نے والدہ کو قتل کردیاتھا اور وہ انسانی گوشت کھا کر اپنی تسکین کرتے ہیں ۔

مزید :

جرم و انصاف -Headlines -