اینڈرائڈ کو بھی خطرہ

اینڈرائڈ کو بھی خطرہ
اینڈرائڈ کو بھی خطرہ

  

سان فرانسسکو (نیوز ڈیسک)تحقیق کارو ں نے انکشاف کیا ہے کہ کمپیوٹروں کے علاوہ ”اینڈ رائڈ“ موبائل استعمال کرنے والے صارفین بھی انٹرنیٹ کی سکیورٹی خامی ”ہارٹ بلیڈ“سے متاثر ہو سکتے ہیں۔”ہارڈ بلیڈ“کا نام دنیا کی بیشتر ویب سائٹس کی جانب سے اپنے صارفین کو ”لاگ آن“کرانے کے لئے استعمال کی جانے والی ٹیکنالوجی میں حال ہی میں سامنے آنے والی خامی کو دیا گیا ہے۔ اس حوالے سے گوگل نے مؤقف اختیار کیا تھا کہ اس کے بیشتر صارفین اس سے محفوظ ہیں۔ تاہم ٹی وی چینل ”بلوم برگ“نے انکشاف کیا ہے کہ ”اینڈ رائڈ“کا 2012ء کا ورژن استعمال کرنے والے صارفین اس سے محفوظ نہیں۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ ایسے صارفین کی تعداد لاکھوں میں ہے۔ چینل کے مطابق 90کروڑ اینڈ رائڈ فون فروخت کئے جا چکے ہیں اور ان میں سے 34فیصد پرانے ورژن پر چل رہے ہیں۔ اس سکیورٹی خامی سے کمپیوٹروں کو بچانے کیلئے تو نیا کوڈ تیار کر لیا گیا ہے۔ لیکن ماہرین کا کہنا ہے کہ موبائل فونوں میں اس خامی کو دور کرنے میں کچھ وقت لگ سکتا ہے۔ موبائل سکیورٹی کمپنی ”لاکون سکیورٹی“کے سربراہ کا کہنا ہے کہ موبائل کمپنیوں اور نیٹ ورکس کو چاہیئے کہ اس مسئلے سے آنکھیں چرانے کی بجائے اس کا حل نکالیں۔یا درہے کہ چند روز قبل متعدد بڑی ویب سائٹس نے ای میل کے ذریعے اپنے صارفین کو ”پاس ورڈ“تبدیل کرنے کی ہدایت دی تھی۔ خیال ظاہر کیا جا رہا ہے کہ سکیورٹی خامی انٹر نیٹ کے دو تہائی سے زیادہ حصے پر اثر انداز ہو سکتی ہے۔

مزید :

سائنس اور ٹیکنالوجی -