ہائیکورٹ کا نادرا دفاتر میں سہولت کاؤنٹرز بنانے کا حکم

ہائیکورٹ کا نادرا دفاتر میں سہولت کاؤنٹرز بنانے کا حکم

لاہور (نامہ نگار خصوصی ) لاہور ہائیکورٹ نے شہریوں کے شناختی کارڈزپر نام پتہ کی تبدیلی اورکارڈز کی تجدیدمیں مشکلات کے ازالے کے لئے نادرا دفاتر میں سہولت کاؤنٹرز بنانے کا حکم دیتے ہوئے قرار دیاہے کہ سرکاری محکموں کی غفلت کے باعث معمولی سے کام کے لئے شہری دھکے کھاتے پھر رہے ہیں ۔ مسٹر جسٹس سید منصور علی شاہ نے یہ حکم کینٹ کے رہائشی حنا اویس کی درخواست پر جاری کیا، درخواست گزار کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ ڈیڑھ برس قبل اس کا شناختی کارڈ گم گیا تھا، کارڈ دوبارہ بنوانے کیلئے تمام ضروری دستاویزات مکمل کرنے کے باوجود نادرا حکام اس کا شناختی کارڈ نہیں بنا رہے اور غیرضروری اعتراضات عائد کر رہے ہیں اور وہ ایک برس سے صرف شناختی کارڈ بنوانے کے لئے عدالتوں اور نادرا دفاتر کے دھکے کھاتے پھر رہی ہے، عدالت نے قرار دیا کہ المیہ ہے کہ شناختی کارڈ بنوانے میں بھی شہریوں کو ذلیل کیا جا رہا ہے ، شہریوں کو عدالتوں اور سرکاری محکموں کے دھکے کھانے پڑ رہے ہیں، نادرا حکام کی غفلت اور نااہلی کے باعث ہائیکورٹ میں روزانہ کئی کئی درخواستیں آ رہی ہیں جو عدالتوں پر اضافی بوجھ ہے ۔ عدالت نے خاتون کا شناختی کارڈ بنوانے کی درخواست نادرا کو بھجواتے ہوئے وفاقی حکومت کو حکم دیا کہ نادرا کے تمام دفاتر میں سہولت کاؤنٹرز بنائے جائیں تاکہ شناختی کارڈ پر نام پتہ کی تبدیلی اور نئے کارڈز بنوانے کے لئے آنے والے شہریوں کو مشکلات سامنا نہ کرنا پڑے، عدالت نے وفاقی حکومت کے وکیل کو حکم دیا کہ عدالتی حکم کے بارے میں متعلقہ حکام کو فوری آگاہ کیا جائے۔ سہولت کاؤنٹر

مزید : صفحہ آخر


loading...