خاتون بال بنوانے بیوٹی سیلون پر گئی اور چند لمحوں بعد ہی ہسپتال میں زندگی اور موت کی جنگ لڑنا پڑ گئی، وجہ ایک ایسی چھوٹی سی غلطی جو بال کاٹتے وقت حجام اکثر کرتے ہیں، جانئے اور محفوظ رہیے

خاتون بال بنوانے بیوٹی سیلون پر گئی اور چند لمحوں بعد ہی ہسپتال میں زندگی اور ...
خاتون بال بنوانے بیوٹی سیلون پر گئی اور چند لمحوں بعد ہی ہسپتال میں زندگی اور موت کی جنگ لڑنا پڑ گئی، وجہ ایک ایسی چھوٹی سی غلطی جو بال کاٹتے وقت حجام اکثر کرتے ہیں، جانئے اور محفوظ رہیے

  

نیویارک(نیوزڈیسک) اکثر خواتین بیوٹی پارلر سے بال بنواتی ہیں جس کے لئے انہیں سیلون میں کرسی پر بیٹھنا پڑتا ہے جو کہ ایک عام سی بات ہے لیکن اگر ذرا سی بھی بے احتیاطی ہوجائے تو اس خاتون کی طرح وہ بھی ہسپتال پہنچ سکتی ہیں۔

امریکی شہر سان فرانسسکو کی الزبتھ سمتھ نامی خاتون اپنے بال بنوانے سیلون گئی جہاں اسے کرسی پر بیٹھا کر بال بنائے جارہے تھے کہ اس کی گردن کی شریان متاثرہوگئی جس کی وجہ سے اس پر فالج کا شدید حملہ ہوا۔الزبتھ کو فوری طورپر تشویشناک حالت میں ہسپتال پہنچایا گیا جہاں سی ٹی سکین میں بتایا گیا کہ سیلون کرسی پر بیٹھتے اور بال بنواتے ہوئے اس کی گردن کی ایک شریان متاثرہوئی ہے جس کی وجہ سے اس پر فالج (سٹروک)کا حملہ ہوا ہے۔ڈاکٹروں کاکہنا ہے کہ اس بیماری کو ’بیوٹی پارلر سٹروک‘ کا نام دیا جاتا ہے جس کا شکار ہونے والے افراد سر کو دھلوانے کے دوران اس طرح بیٹھتے ہیں کہ ان کی شریان متاثر ہوجاتی ہے جس سے ان پر فالج کا حملہ ہوجاتا ہے۔الزبتھ کا کہنا ہے کہ 8ماہ موت وحیات کی کشمکش میں رہنے کے بعد اب وہ ٹھیک ہوچکی ہے لیکن وہ لوگوں کو بتانا چاہتی ہے کہ جب بھی سیلون جائیں ہمیشہ احتیاط سے کام لیں کیونکہ ایک معمولی سی غلطی یا لاپرواہی سے ا ن کی جان بھی جاسکتی ہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -