عفت ماب بیٹیوں کی عزت و ناموس پر حملے برداشت سے باہر ہوگئے ہیں ،یاسین ملک

عفت ماب بیٹیوں کی عزت و ناموس پر حملے برداشت سے باہر ہوگئے ہیں ،یاسین ملک

  

سری نگر(کے پی آئی) جموں وکشمیر لبریشن فرنٹ کے چیرمین یاسین ملک نے کہا ہے کہ ہماری عفت ماب بیٹیوں کی عزت و ناموس پر حملے اور پھر ان حملوں کے خلاف احتجاج کرنے والوں پر گولیاں برسا کر دو معصومین کو سفاک طریقے پر تہہ تیغ کردینے کے عمل نے ایک بار پھر بھارت کے مکروہ قابض چہرے اور نوآبادیاتی ذہنیت کو عیاں کردیا ہے۔۔ کشمیری بھارتی شہروں میں زیر تعلیم طالب علموں کے خلاف حملوں کو چپ چاپ برداشت نہیں کریں گے۔ ان خیالات کااظہار لبریشن فرنٹ کے علیل و محبوس چیئرمین محمد یاسین ملک جو سخت علیل ہونے کے باوجود شبیر احمد ڈار، نور محمد کلوال اور بشیر احمد کشمیری کے ساتھ تھانے میں بند ہیں نے قید سے بھیجے گئے اپنے ایک پیغام میں کیا ہے ۔ یہ بات واضح رہے کہ فرنٹ قائد شوکت حمد بخشی بھی نظر بند کئے گئے ہیں۔ قید سے جاری اپنے پیغام میں یاسین ملک نے کہا کہ ہندوارہ میں ہمارے دو مذید معصومین کے خون سے ہاتھ رنگ کر انسانیت کا قتل عام کیا گیا ہے۔

ہمارے دو معصومین کی خطا یہ تھی کہ وہ بھارتی درندگی کا شکار ہونے والی معصوم کشمیری بچی کے بچانے اور اس پر حملہ کرنے والوں کے خلاف احتجاج کررہے تھے لیکن بھارتی فورسز جو ہندووانہ قوم پرستی کے ساتھ ساتھ اپنی نوآبادیاتی سوچ اور قتل عام کیلئے کھلی چھوٹ کے حامل ہیں نے معصوم احتجاجیوں پر گولیوں کی بارش کرکے اپنی سفاکیت ا یک اور ثبوت دے دیا ہے۔عفت ماب کشمیری بچی کی عزت و ناموس پر حملے کی مذمت کرتے ہوئے یاسین ملک نے کہا کہ یہ اپنی نوعیت کا کوئی پہلا واقعہ نہیں ہے بلکہ یہ قوم ایسی بھارتی بے شرمی کو کئی بار دیکھ چکی ہے۔انہوں نے کہا کہ اب جبکہ ہماری ایک بہن پر مکروہ حملہ ہوا ہے اور ہمارے دو معصومین کا لہو بہایا گیا ہے بھارتی حکمران ،انکے کشمیری گماشتے ،اسمبلی ممبران اور دوسرے ہند نواز مگرمچھ کے آنسو بہاتے ہوئے تحقیقاتی ڈھونگ رچنے کا اعلان کرتے نظر آئیں گے۔ ہم ان بے شرموں کو باور کرانا چاہتے ہیں کہ ہم ہماری عزت و ناموس پر ان حملوں اور قتل عام کے سلسلے کیلئے یہ لوگ براہ راست ذمہ دار ہیں کیونکہ قاتل اور سفاک فوج اور فورسز کو قانونی تحفظ دینا انہی کا کام ہے۔ ملک نے کہا کہ کشمیری اپنے لخت جگروں کے سفاک قتل کے خلاف بھرپور احتجاج کریں گے۔ انہوں نے لوگوں سے اپیل کی وہ ہندوارہ واقعات کے خلاف جگہ جگہ احتجاج کریں ۔علیل و محبوس فرنٹ چیئرمین نے کہا کہ بھارت کے مختلف شہروں میں زیر تعلیم کشمیری طلبہ پر آئے روز حملے ہورہے ہیں۔ انہیں قید کیا جاتا ہے، ان کی مار پیٹ ہوتی ہے اور بسااوقات انہیں اور ان کے سامان کو ہوسٹلوں اور کالجوں کے باہر پھینک دیا جاتا ہے۔

مزید :

عالمی منظر -