مقبوضہ کشمیر کے بھارت نوازوں کو ساتھ ملاکر حریت پسندی کے خلاف لڑائی لڑی جائے گی ،بھارتی وزیر

مقبوضہ کشمیر کے بھارت نوازوں کو ساتھ ملاکر حریت پسندی کے خلاف لڑائی لڑی جائے ...

جموں(کے پی آئی) بھارتی وزیر خزانہ ارون جیٹلی نے کہا ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں حریت پسندوں کا مقابلہ کرنے کے لیے بی جے پی نے پی ڈی پی سے اتحاد کرکے حکومت بنائی ہے ۔انہوں نے کہا کہ بھارتی ھکومت کسی بھی طرح حریت پسندوں سے ہر گز سمجھوتہ نہیں کرے گی ۔جیٹلی نے جموں میں بی جے پی کارکنوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بی جے پی کا یہ سیاسی نظریہ ہے کہ کسی بھی طرح کی حریت پسندی سے سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا ۔جیٹلی نے بی جے پی ورکروں پر زور دیا ہے کہ وہ حریت پسندی کا مقابلہ کرنے کے لئے وادی کے مین اسٹریم (بھارت نواز) رہنماوں کا تعان حاصل کریں۔

جیٹلی نے کہا کہ کشمیر کی مین اسٹریم کی تمام سیاسی قوتوں اور عوام کو ساتھ لے کر حریت پسندی کے خلاف لڑائی لڑی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی کے نظریات علیحدگی پسندوں کے یکسر الگ ہیں اس لئے ہمیں مین اسٹریم جماعتوں کا سہارالے کر علیحدگی پسندانہ رحجانات کا پوری طاقت سے مقابلہ کرنا ہوگا۔یٹلی نے کہا کہ اس وقت بھارت اور ریاستی قیادت کے سامنے دو اہم چیلنجز ہیں، پہلا چیلنج قومی دھارے کی تمام سیاسی جماعتوں کو ساتھ لے کر علیحدگی پسندی کے خلاف لڑائی لڑنااور دوسری یہ ہے کہ ریاست میں بنیادی ڈھانچہ سمیت ہر شعبے کی ترقی کرنا ہے ۔جیٹلی نے کہا کہ اسمبلی انتخابات میں بی جے پی کو جموں میں اور پی ڈی پی کو کشمیر میں واضح اکثریت ملی تھی۔ تاہم پی ڈی پی اور بی جے پی کی سیاسی ترجیحات بالکل مختلف ہیں ،یہ ایک مشکل اور عجیب سیاسی حالات تھی،جمہوریت میں مینڈیٹ کا احترام کر کے اس مشکل حالات میں آگے بڑھنے کے چیلنج کو بھارت اور ریاست نے قبول کیا۔ جیٹلی نے ترقی کے منصوبوں کو جلد سے جلد مکمل کرنے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ آئی آئی ٹی اور آئی آئی ایم جیسے ادارے جب بن کر تیار ہو جائیں گی تو وہ پوری قوم کے لئے زندہ وراثت ہوں گی۔

مزید : عالمی منظر