برازیل کی صدر جیلماروسیف کو مواخذے کا سامنا

برازیل کی صدر جیلماروسیف کو مواخذے کا سامنا

  

برازیلیہ(آن لائن)برازیل کی صدر جیلما روسیف نے اپنے خلاف ہونے والی ’بغاوت‘ کی مذمت کرتے ہوئے اشارہ دیا ہے کہ ’نائب صدر مائیکل ٹیمر ان کے خلاف سازش کرنے والوں میں سے ایک ہیں۔‘خیال رہے کہ برازیل کی صدر جیلما روسیف جنھیں نیشنل کانگریس میں مواخذے کا سامنا ہے نے اشارہ دیا ہے کہ نائب صدر ان کی حکومت کا تختہ الٹنے کی سازش کرنے کے سرغنہ ہیں۔برازیل کی صدر کا کہنا تھا کہ مائیکل ٹیمر کی جانب سے پیر کو نشر کیا جانے والا صوتی پیغام اس سازش کا ثبوت ہے۔برازیل کے نائب صدر نے اپنے صوتی پیغام میں یہ ظاہر کیا تھا کہ وہ جیلما روسیف کی جگہ صدر بننے کے لیے تیار ہیں۔اپنے پیغام میں انھوں نے ملک میں قومی اتحاد کی حکومت کی بھی بات کی تھی۔ادھر برازیل کے نائب صدر مائیکل ٹیمر کا کہنا ہے کہ صوتی پیغام حادثاتی طور پر نشر ہو گیا۔ان کے دفتر کا کہنا ہے کہ یہ صوتی پیغام ان کے اتحادیوں تک غلطی سے پہنچ گیا۔اس صوتی پیغام میں ایسا دکھائی دیتا ہے کہ مائیکل ٹیمر اپنی پہلی تقریر کی ریہرسل کر رہے ہیں۔برازیل کے میڈیا نے نائب صدر کا یہ صوتی پیغام کانگریس کمیٹی کے اہم اجلاس جس میں اس بات کا فیصلہ کیا جانا تھا کہ صدر جیلما روسیف کے خلاف مواخذے کی کارروائی جاری رکھنی چاہیے سے کئی گھنٹے قبل نشر کیا تھا۔65 ارکان پر مشتمل کانگریس کی کمیٹی میں 38 ارکان نے صدر کے خلاف مواخذے کی کارروائی کو آگے بڑھانے پر اتفاق کیا جبکہ 27 ارکان نے مخالفت کی۔صدر روسیف کے استعفے کا مطالبہ کافی دنوں سے کیا جا رہا ہے۔ ان کے مخالف انھیں ملک میں اقتصادی بحران کا ذمہ دار قرار دیتے ہیں۔اب 17 سے 18 اپریل کے درمیان ایوان زیریں میں ہونے والے آخری دور کی پولنگ پر سب کی نگاہیں مرکوز ہیں۔

مزید :

عالمی منظر -