جھنگ روڈ پر مسافر بس اور ٹرالر میں خوفناک تصادم ،ایک ہی خاندان کے 4افراد سمیت 25جاں بحق

جھنگ روڈ پر مسافر بس اور ٹرالر میں خوفناک تصادم ،ایک ہی خاندان کے 4افراد سمیت ...

فیصل آباد،جھنگ ( بیورورپورٹ،نمائندہ خصوصی) جھنگ روڈ پر مسافر بس اور ٹرالر میں خوفناک تصادم، 25 افراد جاں کی بازی ہار گئے ٗ متعدد زخمی ٗ زخمیوں میں سے بیشتر کی حالت تشویشناک ٗ جاں بحق ہونے والوں میں دو سگے بھائی‘ماں بیٹی‘ ماں اور دو بیٹے اور ایک ہی خاندان کے چار افراد بھی شامل ٹھیکری والا موڑ کے قریب حادثہ بس ڈرائیور کو نیند آنے کے باعث پیش آیا ٗ زخمیوں اور نعشوں کو الائیڈ ہسپتال منتقل کر دیا گیا ‘ جائے حادثہ اور ہسپتال میں رقت آمیز مناظر‘ لوگ اپنے پیاروں کے بکھرے اعضا دیکھ کر دھاڑیں مار مار کر روتے رہے‘جاں بحق اور زخمی ہونے والے مسافروں میں سے بیشتر کا تعلق لاہور اور فیصل آباد سے ہے ٗ مسافروں سے بھری بدقسمت بس لاہور سے لیہ جارہی تھی ٗ کہ سامنے سے آنے والے ٹرالر سے ٹکرا گئی ٗ وزیراعلی پنجاب شہباز شریف کا حادثے پر اظہار افسوس ٗ زخمیوں کو بہترین طبی سہولیات فراہم کرنے کا حکم ٗ حادثے کی رپورٹ طلب کرلی ۔ تفصیلات کے مطابق لاہور سے لیہ جانے والی بس جھنگ روڈ پر ٹرالر سے ٹکرا گئی جس کے نتیجے میں 25افراد موقع پر جاں بحق جبکہ متعدد زخمی ہوگئے ۔ حادثہ بدھ کی علی الصبح اس وقت پیش آیا جب مسافروں سے بھری ایک بس لاہور سے لیہ جارہی تھی کہ سامنے سے آنے والے ٹرالر سے ٹکرا گئی ۔ مرنے والوں میں دو سگے بھائی‘ماں بیٹی‘ ماں اور دو بیٹے اور ایک ہی خاندان کے چار افراد بھی شامل ہیں، جائے حادثہ پر انسانی اعضا بکھرے نظر آئے اور ہر طرف قیامت صغریٰ کا منظر دکھائی دے رہا تھا‘ مرنے والوں میں تیرہ آدمیوں کی شناخت ہو گئی ہے جن میں عبد الرحمن ولد صابر علی‘ احمد رضا ولد صابر علی‘ شیراز ولد یعقوب‘ عاشر حمید ولد عبد الحمید‘ شہادت علی ولد غلام علی‘ اسود ولد غلام علی‘ آسیر زوجہ غلام علی‘ کاشف علی ولد شوکت علی‘ ندیم‘ سلیم‘ سجاول ولد سجاد‘ منظوراں بی بی زوجہ عابد حسین‘ صائمہ دختر مجاہد حسین شامل ہیں جبکہ زخمیوں میں ابھی تک جن افراد کی شناخت ہو ئی ہے ان میں خادم حسین ولد فضل‘ آصف ولد انور‘ خادم حسین ولد جمیل‘ محمد بوٹا ولد اللہ رکھا‘ زبیر ولد عبد الحمید‘ محمد زاہد ولد ظفر‘ منظور حسین ولد محمد بخش‘ آمنہ زوجہ ناصر‘ راشد محمود ولد عبد الغفور اور محمد ناصر ولد رسید شامل ہیں‘ کئی زخمیوں کے ہوش میں نہ ہونے کے باعث ابھی تک ان کی شناخت نہ ہو سکی ہے‘ ریسکیو 1122کی چودہ گاڑیوں نے زخمیوں اور مرنے والوں کو الائیڈ ہسپتال منتقل کیا‘ جماعتہ الدعوۃ کے جوانوں نے بھی امدادی کاموں میں حصہ لیا اور مرنے والوں کے لئے تا بوت فراہم کئے‘ حادثہ میں جاں بحق ہونے والے افراد کی زیادہ تر تعداد کا تعلق لیہ اور فتح پور کے علاقہ سے بتایا جاتا ہے ۔ ابھی تک مرنے والے کئی افراد کی شناخت نہ ہو سکی ہے جبکہ متعدد زخمیوں کی حالت تشویش ناک ہونے کے باعث ہلاکتوں میں اضافہ کا خدشہ ہے ۔ حادثے کے بعد امدادی ٹیموں کے اہلکاروں نے زخمیوں کو فوری طور پر طبی امداد کے لئے قریبی ہسپتالوں میں منتقل کیا جہاں متعدد زخمیوں کی حالت تشویشناک بتائی جا رہی ہے۔ جاں بحق ہونے والوں میں ایک دسویں جماعت کا طالب علم بھی شامل ہے جو امیدوں کا جہاں سجائے مسافر بس پر سوار ہو کر والد کے ہمراہ اپنی منزل کی طرف گامزن ہوئے لیکن ان کا یہ سفرآخری ثابت ہوا اور دونوں خالق حقیقی سے جاملے ۔ریسکیو حکام نے 19افراد کو الائیڈ ہسپتال منتقل کیا جن میں سے 4زندگی کی بازی ہار گئے ۔جاں بحق اور زخمی ہونے والوں میں سے بیشتر افراد کا تعلق فتح پور ، لاہور اور فیصل آباد سے ہے ۔ لاہور میں رشتہ داروں کے گھر سے باپ کے ہمراہ واپس آنے والا 15 سالہ شیراز یعقوب بھی لقمہ اجل بن گیا ۔ باپ کہتا ہے کہ بیٹے کا جمعرات کو میڑک کا پریکٹیکل تھا لیکن زندگی نے مہلت ہی نہیں دی ۔حادثے میں جاں بحق ہونے والے افراد کی لاشوں کو شناخت کے بعد ورثا کے حوالے کیا جا رہا ہے ۔ وزیراعلی پنجاب شہبازشریف نے فیصل آباد کے قریب ہونے والے ٹریفک حادثے میں قیمتی انسانی جانوں کے ضیاع پر دکھ اور افسوس کا اظہار کرتے ہوئے جاں بحق ہونے والے افراد کے لواحقین سے ہمدردی اوراظہار تعزیت کیا ہے۔ وزیراعلی پنجاب نے حادثے میں زخمی ہونے والے افراد کو علاج معالجے کی بہترین سہولتیں فراہم کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے انتظامیہ سے حادثے کی رپورٹ بھی طلب کرلی ہے۔فیصل آباد کے تھانہ ٹھیکری والا کے ایک پولیس اہلکار نے بتایا ہے کہ حادثہ منگل اور بدھ کی درمیانی شب ڈھائی بجے کے قریب اس وقت پیش آیا ۔

مزید : صفحہ اول