پنجاب حکومت کا سرکاری اراضی کا ریکارڈ کمپیوٹرائزڈ سسٹم میں محفوظ کرنیکا فیصلہ

پنجاب حکومت کا سرکاری اراضی کا ریکارڈ کمپیوٹرائزڈ سسٹم میں محفوظ کرنیکا ...

  

لاہور (عامر بٹ) پنجاب حکومت نے صوبے بھرکی سرکاری اراضی کا ریکارڈ کمپیوٹرائزڈ سسٹم میں محفوظ کرنے کافیصلہ کرلیا۔ شاملاٹ دیہہ، وقف شدہ زمین،خسرہ گرداوری قابضین اور سرکاری جائیدادو ں پر بیٹھے ناجائز قابضین کی فہرست بھی اس کمپیوٹرائزڈسسٹم میں شامل کی جائے گی۔تفصیلات کے مطابق صوبائی وزیرقانون راناثنااللہ کی زیرصدارت اعلیٰ سطح اجلاس منعقدکیاگیاجس میں بورڈآف ریونیو پنجاب، لینڈ ریکارڈ انفارمیشن مینجمنٹ سسٹم پنجاب انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ کے انتظامی افسران ،کمشنرلاہوراوردیگر نے بھی شرکت کی۔اجلاس کے دوران صوبے بھرکی اسٹیٹ لینڈ کاریکاردڈکمپیوٹرائزڈسسٹم میں محفوظ کرنے کااصولی فیصلہ کیاگیا اس طرح شاملاٹ دیہہ ،وقف شدہ اراضی ،خسرہ گرداوری قابضین اور سرکاری املاک پر بیٹھے قابضین کی فہرست بھی مرتب کی جا رہی ہے۔سرکاری اراضی اور جی آئی ایس میپنگ کے اس منصوبے کو رواں سال میں مکمل کرنے کاپختہ ارادہ کیاگیاہے جبکہ اس ضمن میں ورلڈ بنک سے تعاون کی درخواست بھی کی جائے گی۔ اجلاس میں یہ بات بھی زیرغور آئی کہ ورلڈبنک سے تعاون نہ ملنے کی صورت سالانہ ترقیاتی منصوبو ں کے تحت اس منصوبے کو مکمل کیاجائیگا۔سرکاری اراضی کے اس ریکارڈ میں صوبے بھر کے سرکاری سکول ،ہسپتال ،سڑکیں ااور پارک بھی شامل ہونگے ۔

مزید :

صفحہ آخر -