موجودہ جمہوری نظام آزاد عدلیہ کی مرہون منت ہے، جسٹس (ر) خلیل الرحمن رمدے

موجودہ جمہوری نظام آزاد عدلیہ کی مرہون منت ہے، جسٹس (ر) خلیل الرحمن رمدے

خان پور(تحصیل رپورٹر )ریٹائرڈ جسٹس سپریم کورٹ خلیل الرحمن رمدے نے کہا ہے کہ موجودہ جمہوری نظام آج بھی آزاد عدلیہ کے مرہون منت ہے۔انہوں نے کہا کہ عدلیہ کی آزادی اور خودمختار ی کیلئے وکلاء اور ججز نے تاریخی قربانیاں دی ہیں۔وہ چک 5پی میں سابق نائب ناظم یونین کونسل جیٹھہ بھٹہ چوہدری سجاد کے جواں سال بیٹے فیصل سجاد کی نماز جنازہ کے بعد صحافیوں سے گفتگو کررہے تھے۔انہوں نے(بقیہ نمبر34صفحہ12پر )

کہا کہ عدلیہ آئین کے مطابق اور اپنے دائرہ کار میں رہ کر کام کرتی ہے۔لیکن بعض اوقات اس سے انتظامیہ کے اختیارات استعمال کرنے کی توقع کی جاتی ہے۔انہوں نے کہا کہ اگر عدلیہ ہی انتظامیہ کے اختیارات استعمال کرنے لگے تو ملکی نظام درہم برہم ہو سکتا ہے۔انہوں نے کہا کہ جمہوریت ایک نظریہ ہے اور اس کے تحت سب کو جمہوری روایات کا خیال رکھتے ہوئے اپنے آئینی دائرے میں رہ کر کام کرنا ہوگا۔انہوں نے کہا کہ اگر عدلیہ اسٹیبلشمنٹ اور سیاسی قوتیں اور میڈیا اپنے اختیارات سے تجاوز نہ کریں تو ملک میں بہترین نظا م چل سکتا ہے۔لیکن اپنے اختیارات کے دائرے سے باہر نکلنے پر مشکلات پیدا ہوتی ہیں۔انہو ں نے کہا کہ موجودہ عدلیہ قطعی غیر جانب دار آئین کی پابند اور آئین کی محافظ ہے۔اور عدلیہ نے اپنے خاموش لیکن مضبوط کردار سے ثابت کیا ہے کہ وہ سیاسی اور انتظامی معاملات میں مداخلت کی کوئی خواہش نہیں رکھتی۔اس موقع پر ممبر چیمبر آف کامرس حاجی مظہر قدیر و دیگر افراد موجود تھے۔

خلیل الرحمن رمدے

مزید : ملتان صفحہ آخر