یمن میں حوثی ملیشیا کا حملہ، 3کمسن بچوں سمیت ہادی فورسز کے 16 جنگجو ہلاک

یمن میں حوثی ملیشیا کا حملہ، 3کمسن بچوں سمیت ہادی فورسز کے 16 جنگجو ہلاک
یمن میں حوثی ملیشیا کا حملہ، 3کمسن بچوں سمیت ہادی فورسز کے 16 جنگجو ہلاک

  


صنعاء(مانیٹرنگ ڈیسک)یمن میں جنگ بند ی کے باوجود حوثی ملیشیا اور حکومت نواز فورسز میں لڑائیاں جاری ،حوثی ملیشیاکے تازہ حملے میں ہادی فورسز کے 13 جنگجو ہلاک ،دوسری طرف یمنی فورسز کے زیر قبضہ صوبے شبوہ میں حوثی باغیوں نے ایک گاؤں پر مارٹر گولا فائر کیا ہے جس کے نتیجے میں 6سے 10سال کی عمر کے 3 بچے مارے گئے ۔

غیرملکی میڈیا کے مطابق یمن میں اقوام متحدہ کی ثالثی میں متحارب فریقوں کے درمیان طے پانے والی جنگ بندی کے باوجود جھڑپیں شدت پکڑتی جارہی ہیں ۔حوثی باغیوں کا دارالحکومت صنعا کے شمال مشرق میں واقع علاقے نہم میں خلیجی عرب اتحاد کے حمایت یافتہ اور صدرعبد ربہ منصور ہادی کی حکومت کے وفادارجنگجوؤں پر حملہ کیا،جس میں 13جنگجو مارے گئے ،حوثی باغیوں کے حملوں میں جنگ بندی کے باوجود شدت آتی جا رہی ہے ،تمام متحارب گروپوں نے جنگ بندی کی پاسداری کا اعلان کر رکھا ہے ،اس کے باوجود جھڑپیں مسلسل جاری ہیں اور اقوام متحدہ کی ثالثی میں طے پانے والی جنگ بندی برائے نام ہی رہ گئی ہے ۔دوسری طرف یمنی فورسز کے زیر قبضہ صوبے شبوہ میں حوثی باغیوں نے ایک گاؤں پر مارٹر گولا فائر کیا ہے جس کے نتیجے میں 6سے 10سال کی عمر کے 3 بچے مارے گئے۔فوجی سیکیورٹی فورسز کے حوالے سے بتایا گیا ہے کہ ایران کی حمایت یافتہ ملیشیاؤں نے جنگ بندی کے باوجود اس علاقے میں پہلے حملہ کیا تھا اور اس کے بعد جھڑپیں شروع ہوگئیں۔

مزید : بین الاقوامی


loading...