نیلم جہلم ہائیڈرو پاور پراجیکٹ رواں ماہ تعمیر کا ایک سنگ میل عبو ر کرلے گا

نیلم جہلم ہائیڈرو پاور پراجیکٹ رواں ماہ تعمیر کا ایک سنگ میل عبو ر کرلے گا

  

لاہور(کامرس رپورٹر)969میگاواٹپیداواری صلاحیت کا نیلم جہلم ہائیڈرو پاور پراجیکٹ رواں ماہ کے آخر تک اپنی تعمیر کا ایک اہم سنگ میل عبو ر کرلے گا ۔ اپریل کے آخری ہفتے میں ٹنل بورنگ مشین کے ذریعے دائیں ہیڈ ریس ٹنل کے دونوں حصوں کو ملا دیا جائے گا اور یوں پراجیکٹ کی 68کلومیٹر سے زائد طویل سرنگوں کی کھدائی مکمل ہوجائے گی۔چیئرمین واپڈا لیفٹیننٹ جنرل مزمل حسین (ریٹائرڈ) نے آزاد کشمیر میں زیر تعمیر نیلم جہلم ہائیڈرو پاور پراجیکٹ پر تعمیراتی کام کا جائزہ لینے کے لئے منصوبے کی مختلف سائٹس کا دورہ کیا۔اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے چیئرمین واپڈا نے کہا کہ یہ بات اطمینان کا باعث ہے کہ منصوبہ 92فیصد مکمل ہوچکا ہے اور اب یہ مقررہ تعمیراتی پلان کے مطابق تیزی سے تکمیل کی جانب بڑھ رہا ہے۔ ہیڈ ریس ٹنل کے دورے پر چیئرمین واپڈا کو بتایا گیا کہ اپریل کے آخر تک سرنگوں کی کھدائی مکمل ہونے پر پانی کے بہاؤ کا نظام اپنی تعمیر کے حتمی مرحلے میں داخل ہوگا اور اس مرحلے کو سات ماہ میں مکمل کر لیا جائے گا جس کے بعدسُرنگیں ڈیم سے پاور ہاؤس تک پانی منتقل کرنے کے لئے تیار ہوجائیں گی۔

اُنہیں مزید بتایا گیا کہ نیلم جہلم منصوبے کے ریزروائر میں اِسی سال اکتوبر کے دوران پانی کی بھرائی شروع ہوجائے گی۔فیلڈ سٹاف سے گفتگو کرتے ہوئے چیئرمین واپڈا نے کہا کہ اپنی تکمیل کے بعد نیلم جہلم ہائیڈروپاور پراجیکٹ اس صدی کا انجینئرنگ شاہکار ہوگا ۔ یہ بات قابل ذکر ہے کہ منصوبے کے پہلے یونٹ سے بجلی کی پیداوار فروری 2018ء کے آخر تک شروع ہوگی ۔ دوسرے یونٹ سے مارچ 2018ء جبکہ تیسرے اور چوتھے یونٹ سے بجلی کی پیداوار کا آغاز اپریل 2018ء میں ہوگا۔نیلم جہلم ہائیڈرو پاور پراجیکٹ ہر سال نیشنل گرڈ کو تقریباً5ارب یونٹ بجلی مہیا کرے گا۔

مزید :

کامرس -