سندھ کو نہ ملی تو سب کی گیس بند کر دیں گے : مراد علی شاہ

سندھ کو نہ ملی تو سب کی گیس بند کر دیں گے : مراد علی شاہ

  

کراچی ( سٹاف رپورٹر 228 ایجنسیاں) وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے کہا ہے کہ سندھ کو گیس نہ ملی تو سب کی گیس کی بند کردیں گے، سوئی سدرن کے دفاتر کراچی ہی میں ہیں ، انتظام خود سنبھال لیں گےِمتحدہ اور جماعت اسلامی نے اسکی حمائت کی ہے۔وزیراعلی سندھ نے سندھ اسمبلی میں خطاب کے دوران وفاق اور سوئی سدرن کو وارننگ دیتے ہوئے کہا کہ ہمارا صوبہ 70ستر فیصد گیس پیدا کرتا ہے، لیکن شہر میں گیس کی صورتحال سب کے سامنے ہے ۔گزشتہ چار ماہ سے سوئی سدرن ہمیں گیس فراہم نہیں کررہی ۔انہوں نے کہا کہ وفاقی حکومت کو متنبہ کررہا ہوں کے اس ہفتے کے آخر تک گیس کی صورتحال بہتر نہ کی تو گیس لائن بند کردیں گے۔مراد علی شاہ نے دھمکی دیتے ہوئے کہا کہ گیس نہ ملی توسوئی سدرن گیس کے دفترپردھاوابول دیں گے۔وزیر اعلی نے کہا کہ نوری آباد میں 100 میگاواٹ کا بجلی گھر تیارہے جس کی ٹیسٹنگ کے لیے سوئی سدرن کمپنی گیس نہیں دے رہی ،4مہینوں سے بجلی گھر کو گیس فراہمی کیلئے ٹال مٹول کی جا رہی ہے۔ بجلی گھر سے ٹرانسمیشن لائن کے الیکٹرک سے منسلک بھی کردی ہے ،سو میگاواٹ بجلی کے الیکٹرک کو دینی ہے اور اپریل سے اسے آن لائن کرنا تھا ،کے الیکٹرک بجلی مانگ رہا ہے ہم دے نہیں پا رہے۔ سندھ 70فیصد گیس پیدا کرتاہے اورگیس ہمیں نہیں مل رہی، وزیر اعلی نے کہا کہ سوئی سدرن نے آج ہماری بات نہ مانی توحکومت اورپوزیشن ارکان سے تعاون مانگوں گا ،کل میں نے سو ئی سدرن کے ایم ڈی سے کہاتھاآج 11بجے تک انتظار کریں گے۔وزیراعلی سندھ مراد علی شاہ کا کہنا ہے کہ گزشتہ 4 ماہ سے ہمارے پلانٹ کو گیس نہیں دی جارہی اور اگر ایک ہفتے میں حالات ٹھیک نہ ہوئے تو پنجاب جانے والی گیس کو بھی بند کردیا جائے گا۔ سوئی سدرن گیس کمپنی کوخبردار کر تاہوں کہ کمپنی نے معاہدے دستخط نہ کیے تو ادارے کے دفتر پردھاوابول کر اس کا کنٹرول سنبھال لیں گے۔وزیراعلی کا کہنا تھا کہ سندھ سے نکلنے والی گیس پر آئین کے تحت سندھ کا پہلا حق ہے ۔آرٹیکل کے تحت گیس اس صوبے کے لوگوں کی ہے اگر وفاق نے معاہدہ نہ کیا تو پنجاب جانے والی گیس پائپ لائن کو بھی بند کردیا جائے گا۔ایم کیو ایم اراکین نے بھی وزیراعلی سندھ کے مطالبے کی حمایت کردی ۔دوسری جانگ چیئرمین سوئی سدرن مفتاح اسماعیل نے کہا ہے کہ سندھ حکومت کے تحفظات دور کرنے کیلئے تیار ہیں ٗ مسائل حل کرنا چاہتے ہیں ٗ وزیراعظم کو لکھے گئے خط سے آگاہ ہیں ٗ جس لمحے بینک گارنٹی ملے گی ٗگیس فراہم کردیں گے۔مراد علی شاہ کی دھمکیوں پر سوئی سدرن گیس کمپنی کے چیئرمین مفتاح اسماعیل نے کہا کہ سیکورٹی ڈپازٹ ملتے ہی گیس فراہم کی جائیگی ٗقانونی طور پر ایسایک طرفہ فیصلہ قانون آئین کی نفی ہوگی ٗنوری آباد کے پاورپلانٹ کا کئی ماہ پہلے سمجھوتہ ہوا تھا۔انہوں نے کہا کہ سندھ حکومت کے وزیر اعظم کو لکھے گئے خط سے آگاہ ہیں ٗ خط میں خیر پور اکنامک زون اورمختلف دیہات تک گیس نہ پہنچنے کی بات کی گئی، ملک میں گیس ذخائر مسلسل کم ہو رہے ہیں، ایل این جی پائپ لائن کے 48 ارب روپے سندھ کے صارفین کو نہیں دینے۔وزیر قانون پنجاب اور ترجمان صوبائی حکومت رانا ثنا نے کہا ہے کہ وزیراعلیٰ سندھ گیس بند کرنے کی طاقت ہی نہیں رکھتے ٗ پیپلز پارٹی اپنی کرپشن چھپانے کے لیے سیاسی حربے استعمال کررہی ہے ،وزیر قانون پنجاب رانا ثناء نے کہا کہ وزیراعلیٰ سندھ ایساکچھ نہیں کرسکتے،ایساکرناپاؤں پرکلہاڑی مارنے کے مترادف ہوگا۔انہوں نے کہا کہ پیپلزپارٹی کوسندھ میں کرپشن کے شدید قسم کیالزامات کا سامنا ہے ٗمیں نہیں سمجھتامرادعلی شاہ جیساکوئی سمجھدارآدمی ایساکرسکتاہے۔

قدر تی گیس

مزید :

صفحہ اول -