گردشی قرضوں‘ بدترین لوڈشیڈنگ ‘ لائن لاسز اور بجلی چوری میں اضافے کے بعد حکومت کے زیر انتظام بجلی پیدا کرنیوالے پاور پلانٹس ‘ جنریشن کمپنیوں کی ناقص کارکردگی بھی سامنے آگئی

گردشی قرضوں‘ بدترین لوڈشیڈنگ ‘ لائن لاسز اور بجلی چوری میں اضافے کے بعد ...

  

ملتان (سٹاف رپورٹر ) گردشی قرضوں‘ بدترین لوڈشیڈنگ ‘ لائن لاسز اور بجلی چوری میں اضافے اور ریکوری اہداف کے حصول(بقیہ نمبر51صفحہ12پر )

میں ناکامی کے بعد حکومت کے زیر انتظام بجلی پیدا کرنے والے پاور پلانٹس ‘ جنریشن کمپنیوں کی ناقص کارکردگی بھی سامنے آگئی ہے ‘ نیپرا کی جانب سے پبلک سیکٹر جنریشن کمپنیوں کی گزشتہ 3سال کی کارکردگی کو بدترین قرار دیا گیا ہے ‘2012‘2013اور2014میں پبلک سیکٹر جینکوز فرنس آئل سے 19.10روپے فی یونٹ سے 19.70روپے تک بجلی پیدا کرتے رہے جبکہ گیس سے 5سے6روپے تک فی یونٹ بجلی کی پیداوار بند رکھ کرقومی خرانے کو اربوں روپے کا نقصان پہنچایا گیا اور صارفین پر مہنگی بجلی کا بوجھ ڈال دیا گیا‘ صارفین نے صورتحال پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے حکومت سے تحقیقات کرانے کا مطالبہ کیا ہے ۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -