محکمہ بلدیات کی طرف سے چینی حکومت کو 4بڑے پراجیکٹس منظوری کیلئے پیش کرنے کا فیصلہ

محکمہ بلدیات کی طرف سے چینی حکومت کو 4بڑے پراجیکٹس منظوری کیلئے پیش کرنے کا ...

  

پشاور( سٹاف رپورٹر)خیبر پختونخوا کے سینئر وزیر بلدیات و دیہی ترقی عنایت اللہ کی زیر صدارت ایک اجلاس میں بیجنگ روڈ شو میں محکمہ بلدیات کی طرف سے چینی حکومت کو چار بڑے پراجیکٹس منظوری کیلئے پیش کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے جس میں پشاور میں جدید اور ماڈرن جنرل بس سٹینڈ اور سی پیک ٹاور کی تعمیر، حیات آباد میں کمرشل اور ریذیڈنشل کمپلیکس کی تعمیر،رنگ روڈکے مسنگ لنک یعنی شمالی حصے کی تعمیر اور ریگی ماڈل ٹاؤن میں جدید طرز کے ہیلتھ سٹی کا قیام شامل ہے ان منصوبوں پر تقریباً ساٹھ بلین روپے لاگت آئے گی اجلاس میں ڈائریکٹر جنرل پشاور ڈیویلپمنٹ اتھارٹی سلیم حسن وٹو نے صوبائی وزیر کو پراجیکٹس کے حوالے سے بریفنگ دی عنایت اللہ نے کہا کہ شہر سے باہر چمکنی کے قریب ایک جدید جنرل بس سٹینڈ تعمیر کیا جائے گااور اس کے ساتھ سی پیک ٹاور بھی شامل ہو گااس منصوبے پر تقریباً 19بلین روپے لاگت آئے گی جبکہ ریگی ماڈل ٹاؤن میں چینی حکومت کے تعاون سے ایک جدید ہیلتھ سٹی تعمیر کیا جائے گا جس میں جدید ہسپتال ، میڈیکل کالج اور میڈیکل انسٹی ٹیوٹس شامل ہیں اس منصوبے پر تقریباً 23بلین روپے لاگت آئے گی انہوں نے مزید کہا کہ حیات آباد میں ایک کمرشل ، تفریحی اور رہائشی کمپلیکس بھی تعمیر کیا جائے گا جس کی تعمیر سے حیات آباد میں نہ صرف تجارتی سرگرمیوں کو فروغ ملے گا بلکہ تفریحی سہولیات بھی میسر آئیں گی اس کے ساتھ رہائشی سہولیات میں بھی اضافہ ہو گا اس منصوبے پر تقریباً گیارہ بلین روپے لاگت آئے گی انہوں نے مزید کہا کہ پشاور روڈ سے ناصر باغ تک رنگ روڈ کے مسنگ حصے پر کام تیزی سے جاری ہے جبکہ چارسدہ روڈ سے ورسک روڈ تک رنگ روڈ مکمل ہو چکا ہے جس میں دو فلائی اوور بھی تعمیر کئے گئے ہیں جبکہ ورسک روڈ سے ناصر باغ تک رنگ روڈ کیلئے اراضی کی خریداری کا عمل جاری ہے اور اس ضمن میں صوبائی حکومت نے فنڈز بھی ریلیز کر دئیے ہیں اس منصوبے پر تقریباً 12بلین روپے لاگت آئے گی۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -