”محمد عامر کی باﺅلنگ میں وہ ’کاٹ‘ نہیں رہی کیونکہ۔۔۔“ وقار یونس اور این بشپ کے بعد شعیب اختر بھی میدان میں آ گئے

”محمد عامر کی باﺅلنگ میں وہ ’کاٹ‘ نہیں رہی کیونکہ۔۔۔“ وقار یونس اور این ...
”محمد عامر کی باﺅلنگ میں وہ ’کاٹ‘ نہیں رہی کیونکہ۔۔۔“ وقار یونس اور این بشپ کے بعد شعیب اختر بھی میدان میں آ گئے

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) ویسٹ انڈیز کیخلاف پاکستان نے ٹی 20 اور پھر ون ڈے سیریز بھی جیت لی مگر اس دورہ کے دوران محمد عامر کی کارکردگی پر سوالیہ نشان لگ گیا ہے اور ہر جانب یہ بحث چل رہی ہے کہ آخر بڑے بڑے بلے بازوں کا کیرئیر ختم کرنے والے محمد عامر کی باﺅلنگ وہ ’کاٹ‘ کیوں نہیں رہی۔

ٹروکالر کی نئی ایپلیکیشن متعارف، گوگل ڈو کیساتھ انضمام کا بھی اعلان

بوریوالہ ایکسپریس وقار یونس اور این بشپ نے ان کے باﺅلنگ ایکشن کو ناقص کاکردگی کا شاخسانہ قرار دیا تو شعیب اختر بھی میدان میں آ گئے اور ایسی وجہ بتا دی کہ پاکستانی بھی دم بخود رہ گئے۔ ان کا ماننا ہے کہ محمد عامر کی ناقص کارکردگی کی یوں تو بہت سی وجوہات ہیں ، ان کے سر کا مسئلہ ہے او ر اب تو رن اپ بھی ٹھیک نہیں رہا، سیدھا کندھا بہت زیادہ نیچے گر رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ سب سے پہلے بات تو یہ ہے کہ محمد عامر کے رن اپ میں ہی جان نہیں رہی، اور یہ محمد عامر جیسے باﺅلر کیلئے اچھی چیز نہیں ہے، وہ رن اپ شروع کرتے ہی مشکل میں دکھائی دیتا ہے اور آخر میں مکمل جان لگا کر وکٹیں لینے کی کوشش کرتا ہے۔ وہ جب بھی گیند پھینکتا ہے تو اس کا سر نیچے کی جانب ہوتا ہے، اور آنکھیں بند ہوتی ہیں، اس طرح اس کی ناقص کارکردگی کے پیچھے ایک سے زائد وجوہات ہیں اور وہ اس طرح کے مسائل کے ساتھ زیادہ دیر نہیں چل سکتا، وہ بہت اچھی باﺅلنگ نہیں کر رہا اور اس وجہ سے اس پر پریشر بھی ہے، اسے زوردار واپسی کرنا ہو گی۔

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کیلئے یہاں کلک کریں

شعیب اختر نے کہا کہ لوگ اسے پرفارم کرتے دیکھنا چاہتے ہیں اور کارکردگی دکھانے کا وقت بھی یہی ہے، اس طرح کی کارکردگی دکھا کر وہ آگے نہیں بڑھ سکتا، اسے ٹیم سے باہر نکال دیا جائے گا اور یہی کڑوا سچ ہے، اچھی کارکردگی سے ہی وہ ٹیم میں رہ سکتا ہے۔

مزید :

کھیل -