ہائی کورٹ نے بیٹے سمیت 2افراد کے قاتل کی سزائے موت کنفرم کردی

ہائی کورٹ نے بیٹے سمیت 2افراد کے قاتل کی سزائے موت کنفرم کردی
ہائی کورٹ نے بیٹے سمیت 2افراد کے قاتل کی سزائے موت کنفرم کردی

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہورہائیکورٹ کے2رکنی خصوصی بنچ نے بیٹے سمیت 2افراد کے قتل کے مجرم محمدعباس کوسزائے موت دینے کا ٹرائل کورٹ کا فیصلہ برقراررکھا۔جسٹس قاضی محمد امین احمد اورجسٹس اسجدجاویدپرمشتمل 2 رکنی خصوصی بنچ نے دہرے قتل کیس کے مجرم محمد عباس کی بریت کے لئے دائراپیل مسترد کرتے ہوئے اس کی سزائے موت سے متعلق ٹرائل کورٹ کا فیصلہ کنفرم کردیا۔ایڈیشنل پراسیکیوٹرجنرل زبیراحمد فاروق چودھری نے مجرم کا ریکارڈ پیش کیا۔

نیپالی حکام نے کرنل (ر) حبیب ظاہر کو بھارت لے جانے کاخدشہ ظاہر کر دیا:نجی ٹی وی

سرکاری وکیل نے عدالت کوبتایا کہ مجرم محمد عباس نے معمولی جھگڑے پراپنے سگے بیٹے راشد اورمدعی کے والد صاحب طواسین کو قتل کیاجس کا مقدمہ تھانہ صدرفاروق آباد ضلع شیخوپورہ نے 28جون 2013ءکودرج کیا، ایڈیشنل سیشن جج شیخوپورہ نے 18 جنوری2014 ءکو چشم دید گواہوں کے بیانات، میڈیکل رپورٹ اورفریقین کے وکلاءکے دلائل سننے کے بعد میرٹ پرمحمدعباس کو سزائے موت کافیصلہ سنایا، سرکاری وکیل نے عدالت سے استدعا کی کہ مجرم کی بریت کے لئے دائراپیل کومسترد کیا جائے۔

وکیل صفائی نے موقف اختیارکیا کہ خاندانی رنجش کی بناءپر باپ کو بیٹے اورایک رشتہ دار کے قتل کے جرم میں ملوث کیاگیاوہ بے قصورہے۔ایڈیشنل سیشن جج نے ناکافی شواہد کے باوجود ایڈیشنل سیشن جج نے مجرم کو سزائے موت سنائی، وکیل صفائی نے عدالت سے استدعا کی کہ ٹرائل کورٹ کے فیصلے کوکالعدم قراردے کراسے بری کیا جائے،فاضل بنچ نے مجرم محمد عباس کی بریت کی اپیل مسترد کرتے ہوئے ماتحت عدالت کا فیصلہ کنفرم کردیا

مزید :

لاہور -