حکومت چھوٹے تاجروں کیلئے قرضہ سکیم متعارف کروائے،نعیم میر

حکومت چھوٹے تاجروں کیلئے قرضہ سکیم متعارف کروائے،نعیم میر

لاہور(اسد اقبال)آل پاکستان انجمن تاجران کے مرکزی جنرل سیکرٹری نعیم میر نے مطالبہ کیا ہے کہ وفاقی حکومت آئندہ مالی سال کے بجٹ برائے 2018-19میں ایس ایم ایز سیکٹر کو پرمورٹ کر نے کے لیے چھوٹے تاجروں کو ایکسپورٹ ری فنانسنگ ریٹ پر قرضہ سکیم متعارف کروائے جبکہ ٹیکس نیٹ میں اضافہ کے لیے ایف بی آر آسان طریقہ کار رائج کرے۔ آنے والے بجٹ میں ضرورت اس امر کی بھی ہے کہ عام آدمی کو ریلیف دینے کے لیے مہنگائی کے جن کو بو تل میں بند کیا جائے اور معاشی پالیسیوں کا تسلسل برقراررکھے جبکہ حکومت ودہو لڈنگ ٹیکس پر انحصار کم کر تے ہوئے براہ راست آمدن پر ٹیکس لگائے ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز "پاکستان بجٹ تجاویز"میں کیا ۔نعیم میر نے کہا مسلم لیگ (ن)کی حکومت آئندہ مالی سال کا بجٹ عوام دوست بجٹ پیش کر ے گی کیو نکہ یہ عام انتخابات کا وقت ہے جس میں کوئی نیا ٹیکس نہیں لگایا جائے گا۔ ملک میں توانائی بحران نے صنعتی سیکٹر کو شدید نقصان پہنچایا اور اور فیکٹریوں و کارخانوں میں پیداوار کم ہو نے سے جہاں مہنگائی نے طول پکڑا وہیں برآمدی آرڈر بروقت پورے نہ ہونے سے ذر مبادلہ کے ذخائر میں بھی کمی واقع ہوئی ۔ حکومت کو چائیے کہ آئندہ مالی سال کے بجٹ میں بجلی کی کمی کو پورا کر نے کے لیے ڈیمز کی تعمیر کی جائے اور کالا باغ ڈیم کی تکمیل کا بھی آغاز کیا جائے تاکہ ملک اندھیروں سے نکل کر روشن ہو سکے اور صنعتی سیکٹر کا پہیہ چلنے سے بے روزگاری کا خاتمہ بھی ممکن ہو سکے ۔حکومت اگرٹیکس نیٹ کو وسعت دینے کے لیے سنجیدگی سے اقدامات اٹھاتے ہوئے عملی پیش رفت کا مظاہرہ کر ے تو بہت پو ٹینشل مو جو د ہے کیو نکہ اس وقت ملک بھر میں 80فیصد افراد ٹیکس نیٹ میں نہیں ہیں جن کو ٹیکس نیٹ میں لایا جائے ۔ وفاقی حکومت کی جانب سے متعارف کروائی جانے والی ایمنسٹی سکیم سے فائدہ اٹھانا چائیے جس میں ٹیکس نادہندگا ن کو چھوٹ دیتے ہوئے ریلیف دیا گیا ہے ۔

نعیم میر

مزید : علاقائی

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...