کام کرنیوالوں کو سیاست سے باہر کرنا بدقسمتی ، وزیراعظم ، نااہلی پر نواز شریف مضبوط ہوئے:مریم

کام کرنیوالوں کو سیاست سے باہر کرنا بدقسمتی ، وزیراعظم ، نااہلی پر نواز شریف ...

 مظفر آباد(بیورورپورٹ ، مانیٹرنگ ڈیسک ، نیوز ایجنسیاں)وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کا کہنا ہے کہ ہماری بڑی بدقسمتی ہے کہ کام کرنے والے رہنماؤں کو سیاست سے باہر کر دیا جاتا ہے۔مظفرآباد میں نیلم جہلم منصوبے کے پہلے یونٹ کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ منصوبے کی تعمیر میں بہت سے چیلنجز کا سامنا کرنا پڑا اور لوگ کہتے رہے یہ منصوبہ مکمل نہیں ہو گا لیکن تمام تر مشکلات کے باوجود منصوبہ کامیابی سے پایہ تکمیل تک پہنچا۔وزیراعظم نے کہا کہ نیلم جہلم منصوبہ پاک چین دوستی کا شاہکار ہے اور جن لوگوں نے اس منصوبے کی تکمیل کے دوران قربانیاں دی ہیں انہیں خراج تحسین پیش کرتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ ن کی واحد حکومت ہے جس نے صرف باتیں نہیں کام بھی کیا ہے اور اگر سن 2000 کے بعد آنے والی حکومتیں بجلی کی فراہمی کے حوالے سے اپنا حصہ ملاتیں تو آج یہ صورت حال نہ ہوتی۔ان کا کہنا تھا کہ پاکستان میں بجلی موجود ہے لیکن جن علاقوں میں بجلی چوری ہوتی ہے وہاں لوڈ شیڈنگ ہو گی کیونکہ چوری ہونے والی بجلی کا بوجھ ٹیکس ادا کرنے والوں کو برداشت کرنا پڑتا ہے۔وزیراعظم پاکستان نے کہا کہ ہماری بدقسمتی ہے کہ جو لوگ کام کرتے ہیں انہیں عدالتوں میں گھسیٹا جاتا ہے اور ہمیشہ کے لیے سیاست سے باہر کر دیا جاتا ہے۔انہوں نے کہا کہ جس ملک میں سیاسی استحکام نہیں ہوتا وہاں ترقی نہیں ہوتی۔ان کا کہنا تھا کہ سیاست میں فیصلہ عوام کا ہوتا ہے اور جولائی میں عوام انتخابات میں اپنا فیصلہ دیں گے۔وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان 70 سال سے کشمیر کو مقدمہ لڑرہا ہے،اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کے مطابق کشمیر کا مسئلہ حل ہونا چاہیے، گزشتہ دنوں اقوام متحدہ کے جنرل سیکرٹری سے ملاقات میں کشمیریوں پربھارتی مظالم و بربریت سے آگاہ کیا ،7 لاکھ بھارتی فوج مقبوضہ کشمیر میں مظالم ڈھا رہی ہے اب اس ریاستی دہشت گردی کو بند ہونا چاہیے۔وزیراعظم نے کہا کہ کشمیر انسانی حقوق کا ایک مسئلہ ہے جو پوری دنیا کے لیے انسانی حقوق کا چیلنج ہے ہم اس مسئلے کو نہیں بھلا سکتے ہم نے ہرسطح پر اس مسئلے کو اٹھایا ہے اور اٹھاتے رہیں گے، ہم کشمیری عوام کی سفارتی ، سیاسی اور اخلاقی حمایت جاری رکھیں گے،انہوں نے کہا کہ جب ہندوستان پر دباؤ آتا ہے تو وہ ایل او سی پر فائرنگ شروع کردیتا ہے جس کا ہم اس کا بھرپور جواب دیتے ہیں۔شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ ماضی کی کسی حکومت نے بجلی توانائی کی کمی کو پورا کرنے کے لیے کچھ نہیں کیا، کسی سابق حکومت نے 2 ہزار میگا واٹ بجلی پیدا نہیں کی لیکن ہماری حکومت نے 10ہزار میگاواٹ بجلی پیدا کی اور توانائی خاتمے کے لیے متعدد منصوبے بنائے ہیں۔انہوں نے کہا کہ نیلم جہلم پاک چین دوستی کا شاہ کار منصوبہ ہے، لوگ کہتے رہے یہ منصوبہ مکمل نہیں ہوگا لیکن مشکلات کے باوجود منصوبہ کامیابی سے پایہ تکمیل تک پہنچا۔ وزیراعظم نے کہا کہ ہمیں حکم دیا گیا کہ منصوبوں کی تفصیل اخباروں میں نہ دی جائے ہم نے مان لیا،اتفاق ہو یا نہ ہو ہمیں عدالتوں اور الیکشن کمیشن کے حکم کی تعمیل کرنا پڑتی ہے۔وزارت صحت اور عالمی ادارہ صحت کے زیر اہتمام عالمی یوم صحت کے حوالے سے منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ حکومت عوام کو صحت کی بہتر سہولیات کی فراہمی کیلئے پرعزم ہے ،پولیو، تپ دق کے خاتمے سمیت صحت عامہ سے متعلق جاری پروگراموں کیلئے تمام تر ضروری وسائل فراہم کئے جارہے ہیں ،وزیراعظم ہیلتھ انشورنس پروگرام کامیابی سے جاری ،مقصد غریب ترین لوگوں کو صحت عامہ کی سہولیات فراہم کرنا ہے،محدود دستیاب وسائل کے باوجود تعلیم، صحت عامہ اور سماجی ترقی حکومت کی اولین ترجیحات ہیں،بل اینڈ ملنڈا گیٹس فاؤنڈیشن پاکستان کے حفاظتی ٹیکہ جات کے پروگرام میں نمایاں معاونت کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کی کاوشوں کا مقصد عوام کو صحت عامہ کی معیاری اور ارزاں خدمات فراہم کرنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ نیا پاکستان کے عوام اور ترقیاتی پارٹنرز کو یقین دلانا چاہتا ہوں کہ ہم سب کیلئے صحت کے ہدف کے حصول کیلئے پرعزم ہیں۔ محدود دستیاب وسائل کے باوجود تعلیم، صحت عامہ اور سماجی ترقی حکومت کی اولین ترجیحات ہیں۔ شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ حکومت صحت عامہ کے پروگراموں پر بہتر عمل درآمد کے لئے وفاقی اور صوبائی حکومتوں کے درمیان ہم آہنگی اور تعاون کو بہتر بنانے کے لئے اقدامات اٹھاتی رہے گی۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت نے اپنی مدت کے دوران وزارت صحت کے تحت کام کرنے والے محکموں کی استعداد کار بہتر بنانے کے لئے وژن، سمت اور موثر حکمت عملی فراہم کی۔ حکومت کی کاوشوں کے نتیجے میں پولیو کے کیسز میں نمایاں کمی آئی اور یہ خاتمے کے آخری مراحل میں ہے جبکہ بیماریوں سے بچاؤ کے حفاظتی ٹیکہ جات کے پروگراموں کو بھی توسیع دی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کا ہیلتھ انشورنس پروگرام کامیابی سے جاری ہے جس کا مقصد غریب ترین لوگوں کو صحت عامہ کی سہولیات فراہم کرنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس پروگرام کی کامیابی اطمینان بخش ہے۔ وزیراعظم نے بعض حلقوں کی طرف سے مزاحمت کے باوجود ہیلتھ سیکٹر کی ریگولیشن کے لئے وزارت صحت کے اقدامات کو سراہا

لاہور(جنرل رپورٹر)وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف کا کہنا ہے کہ پاکستان کو ایٹمی دھماکوں کے ذریعے ناقابلِ تسخیر قوت بنانے والے نوازشریف کو عدالتی فیصلے کے ذریعے ملک و قوم کی خدمت سے روک دیا گیا۔عدالت کے فیصلے کے باوجود مسلم لیگ (ن) نواز شریف کی رہنمائی میں ملک کی سب سے بڑی جماعت رہے گی۔سپریم کورٹ کے آرٹیکل 62 ون ایف سے متعلق فیصلے پر شہباز شریف نے ٹوئٹر پر اپنے ردعمل کا اظہار کیا۔شہباز شریف نے کہا کہ ہم نے ہمیشہ قانون کی بالادستی اور غیرجانبدار قاضیوں پر یقین رکھا ہے اور عدالتی فیصلے کے باوجود نواز شریف کی رہنمائی میں ہماری جماعت ملک کی سب سے بڑی جماعت رہے گی۔وزیراعلیٰ پنجاب کا کہنا تھا کہ نواز شریف محض ایک فرد کا نام نہیں بلکہ ایک نظریے، فلسفے، عوامی خدمت، قانون کی بالادستی اور ووٹ کے احترام کا نام ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ نواز شریف جیسے رہنما جماعت اور عوام کی خدمت کے لیے کسی عہدے یا منصب کے محتاج نہیں ہوتے۔

شہباز شریف

سیالکوٹ (بیورورپورٹ )مسلم لیگ (ن) کی رہنما اور سابق وزیراعظم نواز شریف کی صاحبزادی مریم نواز نے کہا کہ جب جب نواز شریف کو مائنس کیا گیا وہ پہلے سے زیادہ طاقتور ہو کر سامنے آئے۔سیالکوٹ میں مسلم لیگ (ن) کے ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے مریم نواز کا کہنا تھا کہ نواز شریف اتنا اہم شخص ہے کہ جسے ایک بار نہیں چار بار نااہل کیا گیا، نواز شریف کو 4 بار مائنس کیا گیا لیکن وہ پلس ہوتا جا رہا ہے۔نواز شریف کی نااہلی کی مدت تاحیات نہیں ہے، نااہلی اس وقت تک ہے جب تک یہ فیصلے دینے والے کرسیوں پر ہیں،ان کا مزید کہنا تھا کہ نواز شریف کی گواہی اسی نے دی جو خلاف گواہی دینے آیا تھا، واجد ضیا ء نے عدالت میں کہا نوازشریف کے خلاف کوئی ثبوت نہیں، واجد ضیا نے کہا ’’40 نامعلوم افراد نوازشریف کیخلاف تحقیقات کر رہے تھے‘‘کون تھے وہ 40 نامعلوم افراد؟ 70 سال سے عوام کے نمائندوں کے ساتھ یہی ہوتا آیا ہے۔مریم نواز نے کہا کہ تاریخ گواہ ہے کہ جب جب نواز شریف کو مائنس کرنے اور عوام سے دور کرنے کی کوشش کی تو اللہ کے فضل اور عوام کی طاقت سے نواز شریف پہلے سے زیادہ مضبوط اور طاقتور ہو کر سامنے آتا ہے۔انہوں نے کہا کہ یہ پہلی مرتبہ نواز شریف کو نااہل نہیں کیا گیا بلکہ مخالفین گزشتہ 30 سال سے نواز شریف کو روکنے کی کوشش کر رہے ہیں، پرویز مشرف کے دور میں نواز شریف کو دو مرتبہ عمر قید کی سزا سنائی گئی۔ان کا کہنا تھا کہ آج کی سزا نے مجھے مشرف کا دور یاد دلا دیا ہے کہ جب وہ کہتا تھا کہ نواز شریف تم تاریخ کا حصہ بن جاؤ گے لیکن آج وہی آمر اس ملک سے باہر بیٹھا ہے۔مریم نواز نے کہا کہ نواز شریف کو بیٹے سے تنخواہ نہ لینے پر نا اہل کر دیا گیا اور جو جے آئی ٹی نواز شریف کے خلاف بنائی گئی تھی اس کے سربراہ واجد ضیاء نے کہا کہ نواز شریف کے خلاف کرپشن کے کوئی ثبوت نہیں ملے۔انہوں نے کہا کہ سازشیوں نے غلط اندازہ لگایا اور انہوں نے سوچا تھا کہ جب نواز شریف کو بیٹے سے غلط تنخواہ لینے پر نااہل کر دیا جائے گا تو وہ گھر بیٹھ جائے گا یا ملک چھوڑ کر چلا جائے گا لیکن نواز شریف سازشیوں کے سامنے ڈٹ گیا اور کہا کہ نہ میں جھکوں گا اور نا بکوں گا۔ان کا کہنا تھا کہ نواز شریف زہر تو پی گئے مگر مخالفین کو تکلیف تب ہوئی جب وہ جی گئے، نواز شریف عدالتوں میں بیٹی سمیت پیش ہوتے رہے، اب نواز شریف اور مجھے ہتھکڑیاں لگ جائیں اور ہم جیل چلے جائیں لیکن عوام سب کچھ جان چکے ہیں۔مریم نواز نے عمران خان اور آصف زرداری کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا یہ لوگ سمجھتے ہیں کہ سینیٹ الیکشن کی طرح عام انتخابات میں بھی کچھ حاصل کر لیں گے لیکن 2018 کے عام انتخابات میں مسلم لیگ تاریخ کا سب سے بڑا مینڈیٹ حاصل کرے گی اور شیر کو بارش کی طرح ووٹ پڑے گا۔انہوں نے کہا کہ ایک سال سے مسلم لیگ ن کو توڑنے کی سازشیں ہو رہی ہیں لیکن عام انتخابات میں عوام شازشیوں اور مہروں کو عبرتناک شکست دیں گے۔

مریم نواز

مزید : صفحہ اول

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...