جی ٹی روڈ پر ٹریفک حادثات کا سبب بننے والے مسائل ختم کر رہے ہیں

جی ٹی روڈ پر ٹریفک حادثات کا سبب بننے والے مسائل ختم کر رہے ہیں

اسلام آباد(پ ر) ڈپٹی انسپکٹر جنرل نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹر وے پولیس این فائیو نارتھ محبوب اسلم نے کہا ہے کہ موٹر وے پولیس کے محکمہ کی ترقی کا دارومدار دیانت خوش اخلاقی اور بے لوث مدد کے جذبہ پر منحصر ہے سال 2017میں 92 ٹریفک حادثات ہوئے جس میں 63 حادثات میں موٹر سائیکل سوار شامل تھے حادثات میں جاں بحق افراد میں زیادہ تعداد موٹر سائیکل سواروں کی تھی جس کی وجہ سے نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹر وے پولیس این فائیو نارتھ نے مرحلہ وار کمپین کا آغاز کیا جی ٹی روڈ پر ہونیوالے دوسرے ٹریفک مسائل جو کہ حادثات کا باعث بنتے ہیں کو ایک ایک کرکے مکمل طور پر ختم کیا جائیگا جس کیلئے موٹر وے پولیس پرعزم ہے۔وہ جمعرات کے روز انسپکٹر جنرل نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹر وے پولیس سید کلیم امام کی خصوصی ہدایت پر نارتھ تھری کالا شاہ کاکو میں سیفٹی ہیلمٹ آگاہی تقریب سے خطاب اور میڈیا کے نمائندوں سے گفتگوکر رہے تھے۔ سماجی شخصیات سول سوسائٹی میڈیا نمائندگان اور مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد موٹر وے پولیس افسران ا ور جوانان نے شرکت کی۔ اس موقع پر موبائل ایجوکیشن یونٹ این فائیو نارتھ تھری نے شرکاکو حادثات سے بچا محفوظ ڈرائیونگ اور ہیلمٹ کی افادیت کے متعلق خصوصی لیکچر بھی دیا۔ ڈپٹی انسپکٹر جنرل این فائیو نارتھ محبوب اسلم نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ موٹر وے پولیس کے محکمہ کی ترقی کا دارومدار دیانت خوش اخلاقی اور بے لوث مدد کے جذبہ پر منحصر ہے۔ انہوں نے سیفٹی ہیلمٹ کی اہمیت کو مزید اجاگر کرتے ہوئے بتایا کہ سال 2017میں 92 ٹریفک حادثات ہوئے جس میں 63 حادثات میں موٹر سائیکل سوار شامل تھے حادثات میں جاں بحق افراد میں زیادہ تعداد موٹر سائیکل سواروں کی تھی جس کی وجہ سے نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹر وے پولیس این فائیو نارتھ نے مرحلہ وار کمپین کا آغاز کیا جس کے پہلے مرحلے میں 15 مارچ 2018سے موٹر سائیکل سواروں کو سیفٹی ہیلمٹ سے متعلق بریفنگ کی کمپین شروع کی گئی تھی جس میں لوگوں کو 31 مارچ 2018تک سیفٹی ہیلمٹ سے متعلق مختلف طریقوں سے بریف کیا گیا جن میں سیکٹرز میں روڈ سیفٹی سیمینارز کا آغاز کیا گیا ایک لاکھ پمفلٹس ایک ہزار فری ہیلمٹ تقسیم کئے گئے اور 150 روڈ سیفٹی آگاہی بینرز مختلف جگہوں پر آویزاں کئے گئے اور اس حوالے سے تمام سیکٹر کمانڈرز سے خصوصی آپریشنل میٹنگز بھی کی گئیں۔ دوسرے مرحلے میں یکم اپریل سے جی ٹی روڈ پر بغیر ہیلمٹ موٹر سائیکل سواروں کیخلاف مہم کا آغاز کیا گیا جس میں کاغذات یا موٹر سائیکل کی ضبطگی لائسنس کی منسوخی اور بھاری جرمانہ شامل ہے یکم اپریل سے 10 اپریل 2018تک 88952 بغیر ہیلمٹ موٹر سائیکلوں کو 18007300 روپے جرمانہ کیا گیا 4911 موٹر سائیکلوں کو تحویل میں لیا گیا 342 کے کاغذات ضبط کئے گئے اور زونل کمانڈر سیکٹر کمانڈران نے خود بغیر ہیلمٹ موٹر سائیکل سواروں کو تینوں سیکٹروں میں بھاری جرمانے کئے گئے۔ ڈپٹی انسپکٹر جنرل این فائیو محبوب اسلم نے مزید بتایا کہ اس طرح جی ٹی روڈ پر ہونیوالے دوسرے ٹریفک مسائل جو کہ حادثات کا باعث بنتے ہیں کو ایک ایک کرکے مکمل طور پر ختم کیا جائیگا جس کیلئے موٹر وے پولیس پرعزم ہے۔ موٹر وے پولیس کے اس اقدام کو سول سوسائٹی اور میڈیا نمائندگان نے بھی خوب سراہا تقریب کے اختتام پر سیکٹر کمانڈر نارتھ تھری نے شرکاکا شکریہ ادا کیا تمام مہمانان اور سماجی حلقوں نے روڈ سیفٹی کی اس تقریب کو بہت سراہا اور اس بات کا یقین دلایا کہ موٹر وے پولیس کی اس کوشش میں وہ موٹر وے پولیس کا بھرپور ساتھ دینگے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...