گجرات میں مسلمانوں کا قتل عام،مو دی کےخلاف لندن کے کینٹ تھا نے میں مقدمہ درج

گجرات میں مسلمانوں کا قتل عام،مو دی کےخلاف لندن کے کینٹ تھا نے میں مقدمہ درج
گجرات میں مسلمانوں کا قتل عام،مو دی کےخلاف لندن کے کینٹ تھا نے میں مقدمہ درج

  

لندن (ویب ڈیسک) لندن کے کینٹ پولیس سٹیشن میں بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کیخلاف ”ایف آئی آر“ درج کروادی گئی ہے ، یہ پولیس رپورٹ ” پاکستان پیٹراٹک فرنٹ برطانیہ “ کے چیئرمین طارق محمود نے کرائی ہے۔

یوٹیوب چینل سبسکرائب کرنے کیلئے یہاں کلک کریں

روزنامہ خبریں کے مطابق طارق محمود کا کہنا ہے کہ مودی کےخلاف یہ رپورٹ 2002 ءمیں بھارتی ریاست گجرات میں مسلمانوں کے ہونےوالے قتل عام پر کرائی گئی ہے ، جس سانحہ میں 2000 مسلمانوں کا قتل عام کیاگیاتھا اور نریندر مودی اس وقت گجرات کے وزیر اعلیٰ تھے ، انہوں نے اپنے مختلف انٹریوز کے دوران اس قتل عام پر اظہار افسوس کے بجائے اسے جائز قرار دیا تھا۔

طارق محمود کے مطابق انہوں نے یہ ایف آئی آر برطانیہ کے کریمنل جسٹس ایکٹ 1998ءکے سیکشن 134کے تحت کرائی ہے جس کے مطابق کسی بھی برطانوی شہری پر دنیا کے کسی بھی حصے میں تشدد کرنے ، قتل کرنے یا ان دونوں قسم کے افعال پر اکسانے کے مرتکب شخص جو مجرم سمجھا جاتا ہے ، خصوصاً اگر وہ شخص کوئی سرکاری عہدہ رکھتے ہوئے اس فعل کا مرتکب ہو، چنانچہ ایسے کسی بھی شخص پر مقدمہ چلایا جاسکتا ہے ، اس ضمن میں نریندر مودی پر خصوصی طور پر مقدمہ اس لئے بھی بن سکتا ہے کہ گجرات کے مذکورہ قتل عام میں تین برطانوی شہری سعید داو¿د ، شکیل داو¿د اور محمد اسوت کو بھی قتل کردیاگیاتھا اور مودی پر الزام ہے کہ وزیر اعلیٰ ہوتے ہوئے بھی انہوں نے روکنے کی بجائے یہ قتل عام ہونے دیا۔

مزید : برطانیہ