صاف پانی کمپنی میں بے ضابطگیوں سے متعلق کیس،سپریم کورٹ نے کمپنیوں میں جانے والے بیوروکریٹس کو آئندہ سماعت پر طلب کرلیا

صاف پانی کمپنی میں بے ضابطگیوں سے متعلق کیس،سپریم کورٹ نے کمپنیوں میں جانے ...
صاف پانی کمپنی میں بے ضابطگیوں سے متعلق کیس،سپریم کورٹ نے کمپنیوں میں جانے والے بیوروکریٹس کو آئندہ سماعت پر طلب کرلیا

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)صاف پانی کمپنی میں مبینہ بے ضابطگیوں سے متعلق ازخودنوٹس کی سماعت کے دوران سپریم کورٹ نے صاف پانی کمپنی سمیت دیگرکمپنیوں میں جانے والے بیوروکریٹس کی تفصیلات طلب کر لی اور انہیں آئندہ سماعت پر پیش ہوئے کا حکم دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں 2 رکنی بنچ نے صاف پانی کمپنی میں مبینہ بے ضابطگیوں سے متعلق ازخودنوٹس کی سماعت کی،عدالتی حکم پرصاف پانی کمپنی کے چیف ایگزیکٹوافسرعدالت میں پیش ہوئے۔

چیف جسٹس نے چیف ایگزیکٹو افسر سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ کیا آپ نے بھی لینڈکروزررکھی ہوئی ہے؟،اس پر سی ای او صاف پانی کمپنی نے کہا کہ میرے پاس فارچونرگاڑی ہے۔

چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ یہ گاڑی جوآپ کے پاس ہے،کتنے کی ہے؟،سی ای اوصاف پانی کمپنی نے کہا کہ میری گاڑی کی مالیت 65 لاکھ روپے ہے

عدالت نے کہا کہ جتنے بیوروکریٹس کمپنیوں میں گئے ہیں انہیں گریڈکے مطابق تنخواہ ملے گی۔چیف جسٹس نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ زیادہ تنخواہیں وصول کرنے والے بیوروکریٹس کوتنخواہیں واپس کرناہوں گی۔

چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ کسی سکول کی چاردیواری نہیں توکسی کے واش روم نہیں ہیں،زائدتنخواہیں لینے والے افسران سے پیسے وصول کرکے صحت وتعلیم پرلگائے جائیں۔

چیف جسٹس نے کہا کہ کوئی نیب کوگالیاں دے توسپریم کورٹ سے رجوع کریں،سناہے کوئی وزیرہے جونیب کوگالیاں دے رہا ہے۔

عدالت کاچیف سیکرٹری پنجاب کی خدمات پراطمینان کااظہارکرتے ہوئے آئندہ سماعت پرکمپنیوں میں خدمات دینے والے تمام بیوروکریٹس کوطلب کرلیا۔

مزید : قومی /علاقائی /پنجاب /لاہور

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...