سکول کا سربراہ اور خاتون ٹیچر کلاس روم میں انتہائی شرمناک کام کرتے رنگے ہاتھوں پکڑے گئے، ہنگامہ برپاہوگیا

سکول کا سربراہ اور خاتون ٹیچر کلاس روم میں انتہائی شرمناک کام کرتے رنگے ...

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) استاد کا پیشہ دنیا کا مقدس ترین پیشہ ہے۔اساتذہ سے بہترین قول و فعل کی توقع کی جاتی ہے کیونکہ ان کا طرزعمل طلبہ کی زندگیوں پر براہ راست اثرانداز ہوتا ہے، تاہم گزشتہ دنوں برطانیہ کے ایک سکول میں ایک مرد اور خاتون ٹیچر ایسی شرمناک حرکت کرتے رنگے ہاتھوں پکڑے گئے ہیں کہ سن کر ہی آدمی شرمندہ رہ جائے۔ میل آن لائن کے مطابق 42سالہ ڈپٹی ہیڈ ٹیچر پاﺅل بلینڈ اور 44سالہ خاتون ٹیچر جوڈیتھ ریمزڈیل ایک کلاس روم میں جنسی عمل میں مشغول تھے کہ ایک طالب علم کمرے میں آ گیا اور انہیں رنگے ہاتھوں پکڑ لیا۔

یہ واقعہ برطانوی شہر روسین ڈیل کے ہیسلنگڈن سکول میں پیش آیا۔ واقعے کے روز سکول میں رویژن ڈے تھا اور دونوں ٹیچرز اپنی اپنی کلاس کو گزشتہ اسباق کی دہرائی پر لگا کر خود ایک خالی کلاس روم میں چلے گئے اور یہ بے حیائی شروع کر دی۔ رپورٹ کے مطابق انہیں رنگے ہاتھوں پکڑنے والے طالب علم نے اپنے ساتھیوں کو یہ بات بتائی اور ان میں سے ایک نے اپنے ٹیچر کو بتا دی اور معاملہ سکول انتظامیہ تک پہنچ گیا۔انتظامیہ نے دونوں ٹیچرز کو معطل کرکے ان کے خلاف تحقیقات کا آغاز کر دیا ہے۔ بتایا گیا ہے کہ پاﺅل اور جوڈیتھ دونوں شادی شدہ ہیں۔ پاﺅل اب بھی اپنی 42سالہ بیوی رابیکا کے ساتھ رہ رہا ہے جبکہ جوڈیتھ اپنے شوہر سے علیحدہ رہتی ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس /برطانیہ

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...