شام میں انسانی حقوق کی خلاف ورزی کا رونا رو کر میزائل برسانے والے امریکہ کا اصل چہرہ بے نقاب، ایسا انکشاف سامنے آگیا کہ پوری دنیا اس دھوکے پر دنگ رہ گئی

شام میں انسانی حقوق کی خلاف ورزی کا رونا رو کر میزائل برسانے والے امریکہ کا ...
شام میں انسانی حقوق کی خلاف ورزی کا رونا رو کر میزائل برسانے والے امریکہ کا اصل چہرہ بے نقاب، ایسا انکشاف سامنے آگیا کہ پوری دنیا اس دھوکے پر دنگ رہ گئی

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکہ کی طرف سے شام میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کا رونا روکر میزائلوں کی بارش کی جا رہی ہے۔ ایسے میں شام کے پناہ گزینوں کو پناہ دینے کے حوالے سے اعدادوشمار سامنے آئے ہیں جنہوں نے امریکہ کا دھوکا پوری دنیا پر عیاں کر دیا ہے۔ ویب سائٹ npr.orgکی رپورٹ کے مطابق امریکی محکمہ داخلہ کی طرف سے جاری شامی پناہ گزینوں کے اعدادوشمار میں بتایا گیا ہے کہ گزشتہ سال امریکہ نے صرف 11شامی باشندوں کو پناہ دی۔ 2016ءمیں صدر باراک اوباما کی صدارت کے آخری دنوں میں امریکہ نے 15ہزار 479شامی شہریوں کو پناہ دی، 2017ءمیں یہ تعداد کم ہو کر 3ہزار 24رہ گئی اور رواں سال اب تک صرف 11لوگوں کو پناہ دی گئی ہے۔

یوٹیوب چینل سبسکرائب کرنے کیلئے یہاں کلک کریں

آکسفیم امریکہ کے سینئر پالیسی ایڈوائزر نواح گوٹس شاک کا کہنا تھا کہ ”امریکہ میں شام کے شہریوں کو پناہ دیئے جانے کی تعداد میں کمی کی صورت میں ہم ٹرمپ انتظامیہ کے بیانات اور پالیسیوں کے اثرات دیکھ رہے ہیں۔انہوں نے پناہ گزینوں کے لیے اور بالخصوص شام کے پناہ گزینوں کے لیے اپنے دروازے مسدود کر دیئے ہیں۔یہ وہ لوگ ہیں جنہیں ہماری مدد کی اشد ضرورت ہے۔ اگر موت سے بھاگ کر آنے والے ان افراد پر ہم دروازے بند کر دیں گے تو ان کا کیا ہو گا؟“

مزید : بین الاقوامی